کراچی میں فائرنگ‘ 5 افراد ہلاک‘ پولیس مقابلہ‘ سانحہ عباس ٹاﺅن کا ماسٹر مائنڈ مارا گیا‘ رینجرز چوکی اور دکان پر دستی بموں سے حملے

15 اپریل 2013
کراچی میں فائرنگ‘ 5 افراد ہلاک‘ پولیس مقابلہ‘ سانحہ عباس ٹاﺅن کا ماسٹر مائنڈ مارا گیا‘ رینجرز چوکی اور دکان پر دستی بموں سے حملے

کراچی (کرائم رپورٹر+نوائے وقت رپورٹ+ایجنسیاں) کراچی کے مختلف علاقوں میں فائرنگ کے واقعات، پولیس مقابلے میں عباس ٹاﺅن دھماکے کا ماسٹر مائنڈ ہلاک اور 5 افراد قتل کر دیئے گئے۔ قصبہ موڑ پر رینجرز کی چوکی پر اور یونیورسٹی روڈ پر دکان پر دستی بموں سے حملے کئے گئے۔ تفصیلات کے مطابق سرجانی ٹاﺅن میں سی آئی ڈی پولیس نے ایس ایس پی چودھری اسلم کی قیادت میں سانحہ عباس ٹاﺅن کے ماسٹر مائنڈ امیر گل اسلم محسود عرف اسلم استاد کی نشاندہی پر اسکے ساتھیوں کو پکڑنے کیلئے چھاپہ مارا جس پر فائرنگ شروع ہوگئی فائرنگ کے تبادلے میں زیر حراست ملزم امیر گل اسلم ہلاک اور سی آئی ڈی پولیس کے دواہلکار خالد سعید اور چنوں زخمی ہوگئے پولیس نے جھاڑیوں کے درمیان کھڑی بارود سے بھری گاڑی جس میں دو پریشر ککر بموں سمیت 150 کلو بارود لدا تھا کو قبضے میں لے لیا۔ ایس ایس پی کے مطابق یہ گاڑی عباسی شہید ہسپتال پر حملے میں استعمال ہونی تھی مقابلے کے بعد چند افراد کو بھی حراست میں لے لیا شہر کو تباہی سے بچانے اور مجرموں کیخلاف کامیاب کارروائی پر گورنر سندھ نے پولیس ٹیم کو 20 لاکھ روپے انعام دینے کا اعلان کیا ہے۔ ادھر منگھو پیر کے علاقے کنواری کالونی میں رینجرز کے 800 اہلکاروں نے ٹارگٹڈ آپریشن کرکے 6مشتبہ جرائم پیشہ افراد کو گرفتار کرکے 31 ہتھیار برآمد کر لئے، گڈاپ کے علاقے میں سپر ہائی وے پر پولیس نے ایک بس کی چیکنگ کے دوران 6 غیر ملکیوں کو گرفتار کرلیا جو ازبک بتائے جاتے ہیں۔ ادھر ماری پور میں سینڈرپٹ کے ساحل پر موٹرسائیکل سوار نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے مسیحی نوجوان جسیتا روبن اور اسکی بیوی بینا ڈیکے کو قتل کر دیا دونوں ساحل پر پکنک منانے گئے تھے۔ دریں اثناءشیر شاہ میں 40 سالہ عبدالرحمان اور نیو کراچی میں صبا سنیما کے قریب 50 سالہ رکشہ ڈرائیور کرم الٰہی کو قتل کردیا گیا ۔ علاوہ ازیں رنچھوڑ لائن میں فائرنگ سے 20 سالہ خرم، بنارس پل کے قریب 17 سالہ عدنان گارڈن شو مارکیٹ میں موٹرسائیکل سواروں کی فائرنگ سے عامر، حمزہ اور شاکر کورنگی ڈھائی نمبر میں فائرنگ سے 2نوجوان شدید زخمی ہوگئے۔ ادھر منگھور پیر میں بھتہ نہ دینے پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے ماربل فیکٹری کے مالک اسکے الیکٹریشن اور راہگیر کو شدید زخمی کردیا۔ اسی طرح قصبہ موڑ پر نامعلوم افراد نے رینجرز کی چوکی پر بم پھینک دیا جسکے پھٹنے سے زبردست دھماکہ ہوا مگر اہلکار محفوظ رہے۔ رینجرز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ کراچی میں یونیورسٹی روڈ پر ایکسپو سنٹر کے قریب دکان پر نامعلوم افراد نے دستی بم سے حملہ کردیا تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔