پیپلز پارٹی کے ٹکٹ لینے والے اپنے پاﺅں پر کلہاڑی ماریں گے: غنویٰ

15 اپریل 2013

لاہور (خبر نگار) پیپلزپارٹی شہید بھٹو کی چیئرپرسن غنویٰ بھٹو نے کہا ہے میں اسٹیبلشمنٹ کی باتیں مان لیتی تو 2002ءمیں پیپلز پارٹی کی سربراہ اور حقیقی وارث ہوتی، بھٹو کے نظرئیے کی تکمیل کیلئے ہماری جماعت قومی اور صوبائی اسمبلی کے 160حلقوں میں اپنے امیدوار کھڑے کر رہی ہے، اقتدار میں آکر بلدیاتی نظام بحال کریں گے اور جب تک شفاف انتخابات نہیں ہوتے پاکستانی عوام کی تقدیر نہیں بدل سکتی۔ لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے غنویٰ بھٹو نے کہا پیپلز پارٹی کے پانچ سالہ دور میں ملک میں خودکش دھماکے، ڈرون حملے اور قتل و غارت کے ریکارڈ قائم ہوئے اور حکمرانوں نے ملک اور عوام کیلئے کچھ نہیں کیا، ان کی ساری توجہ اپنا اقتدار بچانے پر مرکوز رہی۔ صوبائی صدر ڈاکٹر مبشر حسن کے ساتھ صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے غنویٰ بھٹو نے کہا پیپلز پارٹی کے انتخابی ٹکٹ لینے والے اپنے پاﺅں پر کلہاڑی ماریں گے ، زرداری لیگ کا عام انتخابات کے بعد سیاسی مستقبل ”صفر“ ہو جائیگا، جب تک حقیقی نمائندے پارلیمنٹ کا حصہ نہیں بنیں گے ، ملک کو کرپشن، لوٹ مار، مہنگائی اور بے روزگاری سے نجات دلانا ممکن نہیں، ملک میں شفاف انتخابات نہ ہوئے تو ملک افراتفری کا شکار ہو جائیگا۔ انہوں نے کہا موجودہ پیپلزپارٹی کا ذوالفقار علی بھٹو اور بے نظیر بھٹو شہید سے دور کا بھی تعلق نہیں بلکہ آصف زرداری کی قیادت میں پیپلزپارٹی ملک و قوم نہیں ذاتی مفادات کی سیاست کر رہے ہیں جس کی وجہ سے عام انتخابات میں عوام ان کو مسترد کر دینگے۔ غنویٰ بھٹو نے کہا مرتضیٰ بھٹو کے بچے جب سیاست میں آئیں گے تو ایک مضبوط ٹیم کے ساتھ آئیں گے ۔ بے نظیر بھٹو کے قتل پر اس وقت کے حکمران پرویز مشرف کو قاتل قرار دیتے ہیں۔ جب مرتضیٰ بھٹو کا قتل ہوا تو کون حکومت میں تھا اور ”قاتل پارٹی “ کون تھی۔ ملک میں موجودہ نظام انصاف سے انصاف صرف حکمرانوں کو ملتا ہے۔ الیکش کے انعقاد کیلئے موجودہ وقت صحیح نہیں، ایک طرف بچوں کے امتحانات ہو رہے ہیں دوسری طرف کسان اپنی فصل کاٹنے میں مصروف ہیں۔ 107 نشستوں پر الیکشن لڑ رہے ہیں، این اے 204 اور 207 سے الیکشن میں حصہ لے رہی ہوں۔