خسرہ سے لاہور میں بچی‘ مظفر گڑھ کی دو بہنیں جاں بحق‘ ہلاکتیں 40 متاثرہ بچوں کی تعداد 8699 تک پہنچ گئی

15 اپریل 2013
خسرہ سے لاہور میں بچی‘ مظفر گڑھ کی دو بہنیں جاں بحق‘ ہلاکتیں 40 متاثرہ بچوں کی تعداد 8699 تک پہنچ گئی

لاہور+ مظفر گڑھ (نیوز رپورٹر+ نامہ نگار+ نوائے وقت نیوز) صوبائی دارالحکومت میں خسرے کے باعث ایک اور بچی ہلاک ہوگئی ہے اور دو یوم کے دوران ہلاک ہونے والے بچوں کی تعداد 5 ہوگئی ہے جبکہ خسرے کے مزید 19 مریضوں کا انکشاف ہوا ہے جبکہ مظفر گڑھ میں بھی 2کمسن بہنیں بھی خسرہ کے باعث دم توڑ گئیں۔ تفصیلات کے مطابق خسرے کے مریضوں میں روز بروز اضافہ جاری ہے، گزشتہ روز میوہسپتال میں ایک 2 سالہ بچی اقرا خسرے کے باعث دم توڑ گئی جبکہ دوسری جانب چلڈرن ہسپتال میں خسرے میں مبتلا 19 نئے بچے داخل کئے گئے ہیں۔ پنجاب بھر میں خسرہ کے مزید 57 کیس سامنے آئے ہیں۔ جس سے پنجاب میں خسرہ سے متاثرہ بچوں کی تعداد 8 ہزار 699 ہوگئی ہے۔ ہلاکتوں کی تعداد 40ہو گئی ۔ علاوہ ازیں مظفر گڑھ کے موضع فتح پور جنوبی بستی والوٹ میں خسرہ کی بیماری کی وجہ سے تین سالہ فرزانہ بی بی اور اس کی بڑی بہن 6 سالہ شہانہ بی بی دم توڑ گئی جبکہ اس بستی میں اب تک 10 سے زائد بچوں میں خسرہ میں مبتلا ہونے کی تصدیق کی جا چکی ہے۔ ادھر لاہور کے میوہسپتال میں خسرے سے متاثرہ 21 نئے بچے داخل کرا دیئے گئے ہیں۔ رواں سال کے ابتدائی چار ماہ میں اب تک گیارہ سو سے زائد بچے خسرے کے باعث ہسپتال داخل ہونے پر مجبور ہوئے، میوہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر زاہد پرویز کا کہنا ہے کہ متاثرہ بچوں کے لئے ہسپتال میں دو خصوصی وارڈز بنا دیئے گئے ہیں۔ شیخوپورہ سے نامہ نگار خصوصی کے مطابق محکمہ ہیلتھ شیخوپورہ کی طرف سے خسرہ سے بچاﺅ کے مناسب اقدامات نہ کرنے کی وجہ سے شیخوپورہ میں روزانہ 300کے قریب بچوں کو خسارہ کی وباءکی وجہ سے بیمار ہونا پڑ رہا ہے۔ چائلڈ سپیشلسٹ ڈاکٹر اسرار احمد نے بتایا کہ شیخوپورہ میں خسرہ کا حملہ شدت اختیار کر گیا ہے اور روزانہ ڈی ایچ کیو ہسپتال شیخوپورہ میں 125کے قریب بچوں کو داخل کیا جا رہا ہے جبکہ 150کے قریب بچوں کو آﺅٹ ڈور میں چیک کیا جا رہا ہے۔ گذشتہ ایک ماہ کے دوران ضلع بھر میں 10ہزار سے زائد بچوں میں خسرہ کا حملہ ہوا ہے تاہم کسی مصدقہ ذرائع نے خسرہ کی ہلاکت کی تصدیق نہیں کی ہے۔ علاوہ ازیں شیخوپورہ میں اتنی بڑی تعداد میں خسرہ کے حملہ کے باعث ولادین میں سخت تشویش پائی جاتی ہے۔ انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب نجم سیٹھی سے مطالبہ کیا ہے کہ غفلت کے مرتکب محکمہ صحت کے افسران کے خلاف فوری طور پر کارروائی کی جائے۔

مری بکل دے وچ چور ....

فاضل چیف جسٹس کے گذشتہ روز کے ریمارکس معنی خیز ہیں۔ کیا توہین عدالت کا مرتکب ...