بلوچستان میں کسی بھی قبائل سے زیادتی برداشت نہیں کی جائے گی: شاہ زین بگٹی

15 اپریل 2013

 ڈیرہ الہ یار (نامہ نگار) بلوچستان کے وسائل پر جتنا بلوچوں کا حق ہے اتنا ہی وہاں بسنے والے دیگر اقوام کا ہے۔ بلوچستان میں کسی بھی قبائل سے زیادتی برداشت نہیں کی جائے گی۔ کراچی ‘ فاٹا اور بلوچستان کے کچھ نو گوایریا بنے ہوئے ہیں۔ جہاں پر حالات درست نہیں حکومت کو توجہ دینی چاہئے۔ اگر وقت پر الیکشن نہیں ہوئے تو ملک کے حالات خراب ہوں گے۔ ان خیالات کا اظہار این اے266 جعفر آباد نصیر آباد جمہوری وطن پارٹی کے صدر اور نامزد امیدوار نوابزادہ شازین بگٹی نے ڈیرہ اللہ یار کے بھٹی ہاﺅس میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرنے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ بگٹی قبائل کی اکثریت ڈیرہ بگٹی سے باہر خانہ بدوشوں کی زندگی بسر کر رہی ہے۔ ڈیرھ لاکھ بگٹی مہاجرین 2005ءکی حالات کے بعد سندھ اور پنجاب کے مختلف علاقوں میں مہاجروں کی زندگی بسر کرنے پر مجبور ہیں۔ نگراں حکومت اور الیکشن کمشن بگٹی مہاجرین کو ڈیرہ بگٹی جانے کے لئے سکیورٹی فراہم کرے یا ان کے لئے دیگر مقامات پر الیکشن میں اپنا رائے دہی استعمال کرنے کے لئے جگہ فراہم کرے۔ نوابزادہ شازین بگٹی اور ان کے چھوٹے بھائی گہرام خان بگٹی کو بھی ہاﺅس میں شاندار استقبال کیا گیا۔ اس موقع پر بھٹی برادری کے سینکڑوں لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی اس موقع پر سردار مرید احمد بھٹی کے بھائی میر فرید خان بھٹی‘ میرقربان علی بھٹی رئیس غلام مصطفی بھٹی اور مہر اللہ بھٹی نے خطاب کیا۔