اسلام آباد ہائیکورٹ نے چیف کمشنر آفس میں نئی بھرتیاں روک دیں

14 اکتوبر 2016 (12:41)

اسلام آباد ہائیکورٹ نے جبری نکالے گئے ملازمین کی درخواست پر چیف کمشنر آفس میں نئی بھرتیوں کا عمل روک دیا ۔اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس اطہر من اللہ نے چیف کمشنر اور ڈپٹی کمشنر آفس سے جبری نکالے گئے 57 ملازمین کی درخواست پر سماعت کی ۔ درخواست گزاروں کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ گزشتہ پانچ برسوں سے کام کر رہے ہیں انتظامیہ نے بغیر وجہ نوکریوں سے نکال دیا ۔ ملازمت سے برخاست کیے جانے والوں میں درجہ چہارم کے ملازم بھی شامل ہیں ۔ دوسری جانب 23ستمبر کو ضلعی انتظامیہ کے دفاتر میں مختلف کیٹیگری کے لئے نئی بھرتیوں کا اعلان کیا گیا ہے ۔ عدالت عالیہ نے انتظامیہ کو چیف کمشنر آفس میں نئی بھرتیوں سے روک دیا ۔