ایسا نہیں کہا کہ عوام حکومت کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں: چیف جسٹس

14 اکتوبر 2016 (11:46)

اسلام آباد : چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس انور ظہیر جمالی نے وضاحت کی ہے کہ انہوں نے گذشتہ روز اورنج لائن ٹرین منصوبہ کے خلاف کیس کی سماعت کے دوران عوام کو حکومت کے خلاف اٹھ کھڑے ہونے کا نہیں کہا۔ اتنی غیرذمہ دارانہ بات نہیں کر سکتے۔ ہم نے کہا تھا کہ عوام کو ووٹ دیتے وقت خیال کرنا چاہئے۔ چیف جسٹس نے جمعہ کے روز اورنج لائن ٹرین منصوبہ کے حوالے سے کیس کی سماعت کے آغاز پر کہا کہ وہ انتہائی اہم بات کرنا چاہتے ہیں۔ کچھ اخبارات میں غلط رپورٹنگ کی گئی ہے کہ عدالت نے آبزرویشن دی ہے کہ عوام حکومت کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں جبکہ حقیقت میں وہ اتنی غیرذمہ دارانہ بات نہیں کر سکتے۔ ان کی بات کو مس کوٹ کیا گیا ہے۔ ہم نے یہ کہا تھا کہ عوام ہی نے حکومت کو منتخب کیا تھا اور عوام کو ووٹ دیتے وقت اس بات کا خیال کرنا چاہئے جبکہ میڈیا کو مخاطب کرتے ہوئے چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ماضی کی طرح حقائق پر مبنی رپورٹنگ کی جائے نہ کہ سنسنی پھیلائی جائے۔ گذشتہ روز کی کارروائی کے دوران غیر ذمہ دارانہ رپورٹنگ کی گئی عدالت یا ججوں کی جانب سے ایسا نہیں کہا گیا کہ عوام حکومت کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں۔ ہم عدالت میں بیٹھ کر ایسی غیرذمہ دارانہ گفتگو نہیں کر سکتے۔