ورکرز ویلفیئر بورڈ میں بھرتی، مردوں پر پابندی کے خلاف ہائی کورٹ میں درخواست دائر

14 اکتوبر 2016

لاہور (وقائع نگار خصوصی) خواتین کو امتیازی سلوک کا نشانہ بنانے کے واقعات تو اکثر منظر عام پر آتے ہیں لیکن لاہور ہائیکورٹ میں ایک ایسا مقدمہ بھی سامنے آیا ہے جس میں مردوں کو امتیازی سلوک کا نشانہ بنائے جانے کی شکایت کی گئی ہے۔ جسٹس شجاعت علی خان نے شہری طاہر سلیم کی درخواست پر سماعت کی۔ درخواست گزار کی طرف سے رانا اکرم ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ پنجاب ورکرز ویلفیئر بورڈ میں مختلف گریڈز کی ایک سو پچاس آسامیوں کا اشتہار دیا گیا۔ اشتہار میں کہا گیا ہے کہ صرف خواتین ہی ان آسامیوں کیلئے درخواستیں دینے کی اہل ہیں۔ مرد کسی قسم کی آسامی کیلئے درخواست بھی نہیں دے سکتے۔ مردوں پر سرکاری نوکریوں کی بھرتیوں کیلئے درخواستیں دینے پر پابندی مردوں کو امتیازی سلوک کا نشانہ بنانے کے مترادف ہے۔ ورکرز ویلفیئر بورڈ میں بھرتیوں کا اشتہار کالعدم کر کے مرد و خواتین کو برابر ی کی سطح پر درخواستیں دینے کا اہل قرار دیا جائے۔ عدالت نے ڈائریکٹر ورکرز ویلفیئر بورڈ کو 30 اکتوبر کو تفصیلی جواب سمیت طلب کر لیا۔
مرد/شکایت