بھارت: مسلم تنظیمیں متحد ہو کر یکساں سول کوڈ کی مخالفت کریں گی: پرسنل لاءبورڈ

14 اکتوبر 2016

دہلی (اے ایف پی) آل انڈیا مسلم پرسنل لاءبورڈ کے سربراہ مولانا ولی الرحمانی نے کہا ہے وزیراعظم مودی کی قانونی اصلاحات کا منصوبہ بھارت کو تقسیم کر دے گا، بھارتی آئین شہریوں کو شادی، طلاق اور پراپرٹی میں وراثت کے قانون کو ان کے مذہب کے مطابق لاگو کرنے کی اجازت دیتا ہے جبکہ وزیراعظم مشترکہ دیوانی قانون متعارف کرنے کی منصوبہ بندی کر رہے اور بھارت میں اندرونی جنگ شروع کر دی ہے ہم عائلی قوانین کو ختم کرنے کی کوشش کی مزاحمت کریں گے بھارت میں سنگل نظریہ نافذ نہیں کیا جا سکتا ۔ مسلم پرسنل لا بورڈ نے 3طلاقیں ایک ساتھ دینے یا نہ دینے سے متعلق لا کمیشن کے سوالنامہ کو فراڈ قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا۔ مودی سرکار اپنی ناکامیاں چھپانے کے لیے اس معاملے کو اٹھا رہی ہے ۔ انتہا پسند مودی سرکار مسلمانوں کے مذہبی معاملات میں دخل دینے کی کوشش کرنے لگی ۔ بھارتی حکومت نے سپریم کورٹ میں ایک ساتھ تین طلاقوں کیخلاف موقف اختیار کیا تھا ۔
بورڈ