توہین رسالت کیس جسٹس اقبال حمید الرحمن نے سزائے موت کے خلاف آسیہ کی اپیل پر سماعت سے انکار

14 اکتوبر 2016

اسلام آباد(نمائندہ نوائے وقت)سپریم کورٹ میں توہین رسالت کی مرتکب ملزمہ آسیہ بی بی کی اپنی سزائے موت کے فیصلے کے خلاف اپیل کی سماعت میں بنچ کے رکن جسٹس اقبال حمید الرحمن نے کیس کی سماعت سے انکار کرتے ہوئے قرار دےا ہے کہ وہ سلیمان تاثیر سے متعلق کیس کی سماعت کرچکے ہیں اس لیے وہ آسیہ بی بی کے حوالے سے کیس نہیں سن سکتے ، جس پر فاضل عدالت نے نئے بنچ کی تشکیل کے لیئے معاملہ چیف جسٹس کو بھجوادےا۔ بروز جمعرات جسٹس مےاں ثاقب نثار ، جسٹس اقبال حمید الرحمن اور جسٹس منظور احمد ملک پر مشتمل تین رکنی بنچ نے آسیہ بی بی کی سزائے موت کے ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل کی سماعت کی تو بنچ کے رکن جسٹس اقبال حمید الرحمن نے کہا کہ وہ اسلام آباد ہائی کورٹ میں سلمان تاثیر کیس کی سماعت کرچکے ہیں یہ کیس اس سے انٹر لنک ہے بہتر ہوگا کہ وہ اس کیس کی سماعت نہ کریںتاکہ شفافیت ،انصاف و قانون کے تقاضے پورے ہوسکیں جس پر جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ اس طرح بنچ نامکمل ہوجاتا ہے انہوں نے نئے بنچ کی تشکیل کے لیئے معاملہ چیف جسٹس کو ریفر کرتے ہوئے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت کے لیئے ملتوی کردی ہے۔ واضح رہے کہ آسیہ بی بی کو توہین رسالت کے الزام میں 2010 میں لاہور کی ماتحت عدالت نے سزائے موت سنائی تھی۔ لاہور ہائی کورٹ نے بھی آسیہ بی بی کی سزائے موت کے خلاف اپیل خارج کر دی تھی، جس پر ملزمہ نے عدالت عظمیٰ میں اپیل دائر کی تھی، سپریم کورٹ نے 22جولائی 2015 کو آسیہ بی بی کی اپیل ابتدائی سماعت کے لئے منظور کی تھی۔
آسیہ کیس