قومی زبان کے نفاذ کی تحریک ملک گیر حیثیت اختیار کرچکی: ڈاکٹر شریف نظامی

14 نومبر 2013

 لاہور (خبر  نگار)  اردو کے تحفظ فروغ  اور ہر سطح پر اسکے مکمل نفاذ کے لیے قائم کردہ قومی زبان تحریک  بفضل خدا خیبر سے لیکر  کراچی اورکوئٹہ  سے لیکر گلگت بلتستان تک پھیل چکی ہے۔ اردو چونکہ استحکام پاکستان کا اسلام کے بعد دوسرا بڑا ستون ہے لہذا پاکستان اور اسلام دشمن  قوتیں اسے پیچھے دھکیلنے کے لیے سرگرم ہیں۔ لیکن ان شاء اللہ پوری قوم کی تائید کے ساتھ ہم اردو کی سربلندی کا پرچم تھامے رکھے گے۔ ان خیالات کا اظہار تحریک کے مرکزی صدر ڈاکٹر محمد شریف نظامی نے نفاذ اردو کے شرکاء سے خطاب  کرتے ہوئے کہا  آخر میں ایک قرارداد منظور کی گئی جس میں حکومت  خیبر پی کے کو  کہا گیا کہ جس طرح  پنجاب میں جبری انگلش میڈیم  ناکام   ہوئی اس سے سبق سیکھتے ہوئے اپنے  صوبہ میں اسکے نفاذ کااعلان واپس لے اور وفاقی حکومت آئین کی دفعہ251 پر عملدرآمد کرتے ہوئے اردو کو مکمل طور پر  ہر سطح پر نافذ کرے۔