حسین حقانی کا دعویٰ مسترد، اوباما نے کشمیر پر مذاکرات کے لئے بھارت پر دباؤ ڈالنے کی پیشکش نہیں کی: سابق عہدیدار وائٹ ہاؤس

14 نومبر 2013

واشنگٹن (اے این این + آئی این پی) وائٹ ہائوس کے سابق عہدیدار اور صدر اوباما کی پہلی مدت صدارت میں قومی سلامتی کونسل میں جنوبی ایشیا کے لئے سینئر ڈائریکٹر انیش گوئیل نے کہا ہے کہ امریکی صدر بارک اوباما نے 2009ء میں مسئلہ کشمیر پر مذاکرات کیلئے بھارت کو قائل کرنے کی کوئی پیشکش نہیں کی تھی جو مبینہ طور پر پاکستان کی طرف سے کالعدم لشکر طیبہ اور طالبان کی حمایت ختم کرنے کے بدلے میں تھی۔ انیش گوئیل نے پاکستان کے امریکہ میں سابق سفیر حسین حقانی کی کتاب ’’شاندار فریب‘‘ کے بعض دعووں کے ردعمل میں کہا ہے کہ اوباما کے حوالے سے حسین حقانی کا مذکورہ دعویٰ بے بنیاد ہے۔ انہوں نے کہا کہ اوباما انتظامیہ کی یہ دیرینہ پالیسی ہے کہ وہ پاکستان اور بھارت کو اپنے باہمی تنازعات دوطرفہ طور پر حل کرنے کیلئے حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔