سعودی عرب سے بیدخلی، پاکستانیوں کا سینٹ میں پیش تحریک التواء منسوخ کرنے کا مطالبہ

14 نومبر 2013

جدہ (امیر محمد خان سے) سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوںنے وزیر اعظم میاں نواز شریف اور چئیرمین سینٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ اے این پی کی جانب سے سینٹ میں بحث کیلئے پیش کی جانے والی تحریک التواء کو منسوخ کرائیں جس میں سعودی عرب سے پاکستانیوں کی بیدخلی پر بحث کی جائے گی۔ پاکستان مسلم لیگ کے قائم مقام صدر چودھری جعفر حسین اور سیکرٹری جنرل نور آرائیں اور دیگر سرگرم پاکستانیوںنے کہاہے کہ سعودی عرب سے بے دخلی صرف پاکستانیوںکی ہی نہیں بلکہ ان تمام لوگوں کی ہورہی ہے جو یہاں غیر قانونی طور پر مقیم ہیں۔ خادم الحرمین الشریفین نے گزشتہ کئی ماہ قبل معافی کا اعلان کیا تھا کہ جو غیرملکی یہاں غیر قانونی طور پر مقیم ہیں یا سعودی وزارت محنت اور داخلہ کے اعلان کردہ قانون پر پورا نہیں اتر رہے وہ اپنے کاغذات قانونی کرا لیں اس سلسلے میں سفارخانہ پاکستان اور قونصیلٹ پاکستان کے ساتھ ہر ملک کے قونصیلٹ اپنے ہم وطنوں کے اصلاح احوال کیلئے گزشتہ مہینوں میں مصروف رہے ہیں۔ اب صرف ان لوگوں کو بیدخل کیا جا رہا ہے جو یہاں غیر قانونی مقیم ہیں۔ پاکستانیوںنے مطالبہ کیا  چونکہ سینٹ کے بیشتر افراد کو اصل صورتحال کا علم نہیں۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ وزارت خارجہ کی جانب سے سینٹ میں صحیح صورتحال پیش کردی جائے تاکہ سیاست دان بلاوجہ اپنے بیانات سے سعودی عرب اور پاکستان کے لازوال اور بہترین تعلقات کی خرابی کا سبب نہ بنیں۔ بحث کو سعودی عرب کے اندرونی معاملات میں مداخلت تصور کیا جائے گا۔