دہشت گردی کے خلاف جنگ صوبائی نہیں ‘ قومی مسئلہ ہے ‘ چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ

14 نومبر 2013

پشاور (آئی این پی)  پشاور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس دوست محمد خان نے کہا ہے کہ  دہشت گردی کے خلاف جنگ  صوبائی  نہیں قومی مسئلہ ہے، بم دھماکوں میں ہر کسی کو اس کی ضرورت کے مطابق معاوضے کی رقم ملنی چاہئے، اس میں بعض ایسے افراد بھی  ہیں جن کی پراپرٹی اور گاڑیاں انشورڈ ہوتی ہیں لیکن وہ پھر بھی حکومت سے معاوضہ لے جاتے ہیں۔ وہ بدھ کو ہنگو سے تعلق رکھنے والے شوکت نامی شخص کی درخواست پر ریمارکس دے رہے تھے۔ اس موقع پر  مدعی کے  وکیل نے موقف اپنایا کہ باجوڑٗ مہمند ٗ پاڑہ چنار میں متاثرہ افراد کو رقم دی جاتی ہیں جبکہ ہنگو میں متاثر ہونیوالے افراد کو ادائیگی نہیں کی گئی جو کہ ناانصافی ہے اور ان کے موکل کا جن کا 52 لاکھ روپے کا نقصان ہوا ہے ابھی تک ادائیگی نہیں کی گئی۔ چیف جسٹس نے کہاکہ صوبائی حکومت کی ادائیگی کے حوالے سے پالیسی بھی صاف ستھری اور واضح ہونی چاہئے، حکومت نے جو پالیسی اپنا رکھی ہے اس میں کافی ابہام ہے۔ ایک سال پہلے ہدایت کی تھی اس پالیسی پر نظرثانی کی جائے اور اس مسئلے پر ابہام دور کرنے کی ضرورت ہے۔ معاوضے کی رقم عوام کے ٹیکس کا پیسہ ہوتا ہے دو رکنی بنچ نے اس کیس میں سیکرٹری داخلہ اور سیکرٹری فنانس کو نوٹس جاری کرتے ہوئے پندرہ دن میں وضاحت طلب کرلی۔