چیئرمین ایچ ای سی تعیناتی

14 نومبر 2013

یاسین خان
وفاقی حکومت نے ایک اعلامیہ کے تحت ملک کے معروف ماہر تعلیم اور خیبر پختونخواہ کے سابق وزیر تعلیم سید امتیاز گیلانی کو ہائیر ایجوکیشن کمشن کا قائم مقام چیئر مین نامزد کردیا ہے۔ سید امتیاز گیلانی خیبر پختونخواہ کے جنوبی ضلع کوہاٹ کی سید فیملی سے تعلق رکھتے ہیں، وہ ستائیس دسمبر 1947کو کوہاٹ میں پیدا ہوئے، کوہاٹ، پشاور میں اپنی تعلیمی کا میا بیوں کا سفر جاری رکھتے ہوئے انہوں نے بنکاک، تھائی لینڈ اور دیگر یورپی ممالک سے ایم ایس اور سپیشلائزیشن کی ڈگریاں حاصل کیں، انجنیئرنگ کی ڈگری کے حامل سید امتیاز گیلانی کو 2044میں انجنیئرنگ یو نیو رسٹی پشاور کا وائچ چانسلر تعینات کیا گیا، وہ 1999سے 2003تک صوبہ خیبر پی کے کے وزیر تعلیم، اطلاعات، نوجوانان اور سیاحت بھی رہے، ملک کی معاشی صورت حال میں گہری دلچسپی رکھنے والے سید امتیاز گیلانی کی زیر نگرانی تعلیمی اداروں نے مثالی ترقی کی، ان کی محنت، وفاداری اور کام سے لگن ہی کی بنیاد پر وفاقی حکومت نے انہیں ہائیر ایجوکیشن کمشن کا قائم مقام م چیئر مین نامزد کرکے انہیں ایک بڑے امتحان میں ڈال دیا ہے، ماضی میں ہائیر ایجوکیشن کمشن کی سربراہی سونے کی کان کی سربراہی کے مترادف تھی، فنڈز کی بہتات کی وجہ سے ایچ ای سی کی تمام پوسٹیں انتہائی پر کشش تھیں، مگر گذشتہ چار سالوں سے مسلسل فنڈز کی کمی اور موجودہ حالات میں فنڈز کی انتہائی کمی کی وجہ سے یہ سیٹ اپنی کشش کھو بیٹھی ہے، ملک بھر کی جامعات کو مالی تعاون فراہم کرنے میں ایچ ای سی کا کردار مسلمہ ہے، تاہم گذشتہ کئی سالوں سے وفاقی حکومت کی جانب سے ایچ ای سی کے فنڈز میں کٹوتی کی وجہ سے ایچ ای سی کی جانب سے ملک بھر کی جامعات کو فراہم کئے جانے والے فنڈز میں بھی اسی تناسب سے کٹوتیاں کی جانے لگیں جس سے پسماندہ اضلاع کی یو نیو رسٹیوں کو شدید مالی بحران کا سامنا ہے، سید امتیاز گیلانی کو ایسے حالات میں قائم مقام چیئر مین بنایا گیا جب ملک بھر کی جامعا ت مالی بحران سے دوچار ہیں، ان حالات میں سکالر شپ کے عمل کو جاری رکھنا اور جامعات کے مالی بحران پر قابو پانا ان کے لیئے ایک بہت بڑا چیلنج ہے، سید امتیاز گیلانی کو یہ بھی اعزاز حاصل ہوا ہے کہ وہ ہائیر ایجوکیشن کمشن کے پہلے چیئر مین ہیں جن کا تعلق خیبر پختونخواہ کے جنوبی اضلاع سے ہے اور یوں خیبر پختونخواہ کے جنوبی اضلاع میں قائم یو نیو رسٹیوں کو ان سے مذید توقعات وابسطہ ہیں، گومل یو نیو رسٹی جنوبی اضلاع کی سب سے پرانی یو نیو رسٹی ہے جہاں کے اساتذ اس وقت تک تنخواہوں سے محروم ہیں، گومل یو نیو رسٹی کی اساتذہ برادری نے وفاقی حکومت کی جانب سے سید امتیاز گیلانی کو ہائیر ایجوکیشن کمشن کا چیئر مین نامزد کرنے کے فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے، گومل یو نیو رسٹی اکیڈیمک سٹاف ایسوسی ایشن کے سابقہ صدر ڈاکٹر نجیب اللہ خان نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ سید امتیاز گیلانی کا شمار ملک کے ایماندار، قابل، محنتی ماہرین تعلیم میں ہوتا ہے، انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت نے سیاسی وابستگی سے بالا تر ہوکر میرٹ پر ہائیر ایجوکیشن کے چیئر مین کی تعیناتی کرکے تعلیم دوستی کا ثبوت دیا ہے، انہوں نے کہا کہ ملک بھر کے اساتذہ میں امتیاز گیلانی کو انتہائی قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے اور صوبہ خیبر پختونخواہ کے جنوبی اضلاع کے باسی ہونے کی حیثیت سے ہمیں یہ امید ہے کہ وہ گومل یو نیو رسٹی کی ترقی اور خوشحالی کی جانب اپنی خصوصی توجہ مبذول کریں گے ، یہ بات بھی ماہرین تعلیم سے پوشیدہ نہیں کہ ہائیر ایجوکیشن کمشن میں بھی گروپ بندیاں موجود ہیں، سابقہ ملازمین کو یو نیو رسٹی گرانٹس کمشن سے ایچ ای سی میں ضم ہوئے ہیں وہ اور ایچ ای سی میں تعینات نئے ملازمین میں مختلف پوسٹوں کے حصول کی سرد جنگ عرصہ دراز سے جاری ہے، اور اس سرد جنگ سے ادارہ کی کارکردگی بھی متاثر ہوتی ہے جس کے اثرات براہ راست چیئر مین ایچ ای سی پر مرتب ہوتے ہیں ان حالات اور موجودہ گروپوں کو اعتماد میں لے کر کامیابی کے مراحل طے کرنا سید امتیاز گیلانی کی مہارت، سپورٹس مین سپرٹ کی آزمائش ہوں گے ، امید ہے کہ اگر وفاقی حکومت ہائیر ایجوکیشن کمشن میں حکومتی مداخلت کی روش ختم کرنے کے دعوے کو عملی جامہ پہناتی ہے تو یقینا اس ادارہ سے مثالی نتائج ملک اور قوم کی تعلیمی ترقی کا باعث بنیں گے 

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...