جاپان میں زلزلے کے بعد دوایٹمی ری ایکٹرز سے تابکاری مادوں کے اخراج کے بعد نو مزید ری ایکٹرز پر بھی ہنگامی صورتحال نافذ کر دی گئی۔

14 مارچ 2011 (17:56)
جاپان کے سترہ مقامات پر کل پچپن جوہری ری ایکٹرز ہیں جن میں سے نوری ایکٹرزپر ہنگامی صورت حال نافذ کی گئی ہے۔ جاپانی حکام نے ان ری ایکٹرز سے سیزیم نامی تابکار کے اخراج کی نشاندہی کے بعد جوہری معلومات کی فراہمی میں کمی کردی ہے تاہم حکام کے مطابق یہ تابکاری تباہ کن نہیں۔ ادھر جاپان کے دارالحکومت ٹوکیو سے دو سو ستر کلومیٹر دور واقع فوکو شیما کے دائی آچی نیوکلیئر کمپلیکس سے بجلی کی فراہمی بھی معطل ہوگئی ہے، حکام نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ کئی مزید جوہری تنصیبات میں ٹھنڈا کرنے کی صلاحیت ختم ہوچکی ہے۔ جاپان کی جوہری اور صنعتی سیفٹی ایجنسی کے حکام کی طرف سے کہا گیا کہ سیزیم نامی تابکار مادے کے اخراج کی نشاندہی ہوگئی ہے تاہم اس سے تباہی نہیں ہوتی البتہ آیوڈین تابکاری ہوئی تو شریانوں کا کینسرپھیل سکتا ہے۔