لاہورہائیکورٹ نے ریمنڈ ڈیوس کے استثنیٰ سے متعلق چاروں درخواستیں نمٹاتے ہوئے قراردیا ہے کہ ریمنڈ کے استثنی کا فیصلہ ٹرائل کورٹ کرے گی

14 مارچ 2011 (13:59)
لاہورہائیکورٹ نے ریمنڈ ڈیوس کے استثنیٰ سے متعلق چاروں درخواستیں نمٹاتے ہوئے قراردیا ہے کہ ریمنڈ کے استثنی کا فیصلہ ٹرائل کورٹ کرے گی
دوران سماعت وزارت خارجہ نے اپنا جواب عدالت میں پیش کرتے ہوئے کہا کہ ریمنڈ آفیشل بزنس ویزے پر پاکستان آیا جسے امریکی حکومت کے کہنے پر ویزا دیا گیا وزارت خارجہ کی جانب سے کہا گیا کہ وزارت خارجہ سرکاری ریکارڈ میں ردو بدل کی کوئی کوشش نہیں کر رہی اور وزارت خارجہ آئین کے تحت متعین کردہ اپنی ذمہ داریوں سے آگاہ ہے ۔ وزارت خارجہ نے مزید کہا کہ امریکی قونصلیٹ کی جانب سے ستائیس جنوری دو ہزارگیارہ کو وزارت خارجہ سے رابطہ کرکے کہا گیا کہ ریمنڈ کے پاس سفارتی پاسپورٹ ہے اور اسے استثنی حاصل ہے لہذا اسے امریکی سفارت خانے کے حوالے کیا جائے ۔ سماعت کے بعد فاضل عدالت نے کہا کہ ریمنڈ ڈیوس کا معاملہ ٹرائل کورٹ میں چل رہا ہے اگر کوئی سفارتی استثنی کا سرٹیفیکٹ ہوا تو وہ ٹرائل میں پیش ہو جائے گا ۔ سماعت کے بعد فاضل عدالت نے ریمنڈ کے استثنی سے متعلق چاروں درخواستیں نمٹا دیں جبکہ ویانا کنونشن کے خلاف دائر درخواست پر وفاقی حکومت سے انتیس مارچ کے لیے جواب طلب کر لیا۔