ظل الٰہی! دیکھ لی تیری بادشاہی

14 مارچ 2011
مکرمی! پاکستان کے حالات سے ہر حساس فرد خون کے آنسو رو رہا ہے۔ اخبار پڑھتے ہیں تو ہر طرف قتل و غارت کی خبروں کے سوا یا پھر ریمنڈ کیس کے سوا کچھ نظر نہیں آتا ٹی وی ہے تو وہاں سیاستدانوں کی لڑائیاں دیکھنے کو ملتی ہیں۔ جبکہ اصل حالات سے تو صرف عوام ہی واقف حال ہیں اور مہنگائی کی چکی میں پس رہے ہیں۔ پٹرول مہنگا‘ بجلی مہنگی‘ گیس کی لوڈشیڈنگ ہونے کے باوجود ہزاروں کے بل گیس کے محکمے کو چاہئے کہ ہر صارف کو اس دفعہ ان لکڑیوں کے پیسے ادا کریں جو گیس نہ ہونے کی صورت میں انہوں نے مہنگے داموں خرید کر جلائی لوگوں کو پھلوں کی شکلیں بھول گئیں ہیں۔ سکول بنانے کا کوئی فائدہ نہیں یہاں روٹی تین وقت کھانا مشکل ہے۔ پڑھائی کون کرے گا۔ اہل اقتدار حزب اختلاف اور نوکر شاہی کے فرعونوں یہ دنیا ریشم کے کیڑے کی تھوک اور شہد کی مکھی کے تھوک سے بڑھ کر نہیں ہے۔ آپ نے روز محشر اپنی تمام کوتاہیوں اور لاپروائیوں کا حساب دینا اور وہ اللہ کا کٹہرا ہو گا جہاں آپ کی کرپشن اور سفارش نہیں چلے گی۔ اس وقت سے ڈریں کیونکہ وہ وقت اب دور نہیں ہے۔
(ریحانہ سعیدہ گڑھی شاہو لاہور)