اقوام متحدہ ٹیم کا بینظیر کی جائے شہادت کا اچانک دورہ‘ کرائم سین کی تصاویر لیں

14 جولائی 2009
راولپنڈی (اے پی پی) محترمہ بینظیر بھٹو شہید کے قتل کی تحقیقات کرنے والے اقوام متحدہ کے کمشن کی دو رکنی معاون ٹیم نے پیر کے روز لیاقت باغ کا اچانک دورہ کیا اور کرائم سین کی تصاویر لیں ۔ تکنیکی اور سکیورٹی امور کی ماہر اس ٹیم نے اسلام آباد پولیس کے سکیورٹی حصار میں لیاقت باغ کے باہر جائے شہادت کا معائنہ کرنے کے علاوہ فراہم کردہ نقشے کا بھی تفصیلی جائزہ لیا۔ اس ٹیم کی ابتدائی رپورٹس اور معلومات تک رسائی کے بعد اقوام متحدہ کا تحقیقاتی کمشن اسی ہفتے پاکستان کا دورہ کرے گا۔ تکنیکی امور کی ماہرین کی ٹیم کا چند منٹوں پر محیط دورہ اس قدر اچانک اور خفیہ تھا کہ راولپنڈی پولیس کے اعلیٰ حکام کو بھی اس کی کوئی اطلاع نہیں تھی۔ تکنیکی ٹیم پہنچی تو لیاقت باغ کو ٹریفک کیلئے بند کر دیا گیا۔ تکنیکی ٹیم نے جائے شہادت پر کرائم سین کی تصاویر لیں اور تحقیقاتی ایجنڈے کے نکات پر ٹیم نے اہلکاروں سے تبادلہ خیال کیا اور واپس روانہ ہو گئی۔ اس حوالے سے ذرائع نے ’’اے پی پی‘‘ کو بتایا کہ راولپنڈی پولیس نے بینظیر بھٹو قتل کیس کے ملزموں اعتزاز شاہ، شیر زمان، رفاقت، حسنین اور مفتی عبدالرشید کے اقبال جرم کے بیانات، چالان کی دستاویزات، ایف آئی آر اور دیگر کاغذات کا انگلش میں ترجمہ کر کے سکاٹ لینڈ یارڈ ٹیم کی تحقیقاتی رپورٹ سمیت تمام شواہد ٹیم کے حوالے کر دیئے گئے ہیں۔ ثناء نیوز کے مطابق دورہ کرنے والی ٹیم کا سانحہ لیاقت باغ کی تحقیقات سے براہ راست کوئی تعلق نہیں بلکہ یہ ٹیم 16 جولائی کو ممکنہ طور پر پاکستان آنے والی اقوام متحدہ کی ٹیم کے دورے سے قبل سکیورٹی صورتحال کا جائزہ لینے آئی تھی۔