کاربن ٹیکس : حکومتی فیصلہ غلط تھا‘ آئندہ ماہ تیل ڈیڑھ روپے لٹر تک سستا کردیں گے : مشیر پٹرولیم

14 جولائی 2009
لاہور (سٹاف رپورٹر/ مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی مشیر تیل و گیس ڈاکٹر عاصم حسین نے کہا ہے کہ آئندہ ماہ تیل کی قیمت ایک سے ڈیڑھ روپے فی لٹر کم کر دیں گے، ملک کو اس وقت 60فیصد گیس کی کمی کا سامنا ہے جو آئندہ برسوں میں مزید بڑھنے کا امکان ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمشن آصف احمد علی کے حلقہ الہ آباد، کنگن پور اور منڈی عثمان آباد میں گیس فراہمی کے منصوبے کی افتتاحی تقریب سے قبل سوئی ناردرن ہیڈ آفس کے باہرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ڈاکٹر عاصم نے کہا کہ کاربن ٹیکس ختم کرنے کا عدالتی فیصلہ درست تھا جس پر حکومت کو کوئی اعتراض نہیں‘ حکومت اس وقت تیل پر10روپے پی ڈی ایل اور 16فیصد جی ایس ٹی وصول کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ گورنر ہاوس سمیت تمام نادہندہ سرکاری ،نیم سرکاری اداروں کے گیس کنکشن کاٹ دئیے جائیں گے۔ انہوں نے مزید ک ہا کہ سی این جی کی قیمتیں بھی ریگولرائز کر دی جائیں گی‘ محکمہ میں جو غلط کام کر رہے ہیں ان کے خلاف ایکشن لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ گیس کی چوری بہت بڑھ چکی ہے جس میں سی این جی سٹیشن بھی ملوث ہیں۔ حکومت گیس کے ذخائر بڑھا کر اور ایران سے پائپ لائن کے ذریعے کمی کو پورا کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت جی ایس ٹی کے علاوہ گیس پر کوئی ٹیکس نہیں لے رہی۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے سمیت آٹھ محکموں کے ذمہ سوئی گیس کے 8 سو ملین روپے واجب الادا ہیں۔ مانیٹرنگ ڈیسک کے مطابق مشیر پٹرولیم نے کہا کہ کاربن ٹیکس عائد کرنے کا حکومتی فیصلہ غلط تھا‘ انہوں نے کہا کہ سوئی گیس کے کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرنے کے لئے فہرستیں طلب کر لی ہیں۔