صفد ر علی چودھری کی یاد میں

14 فروری 2018

مکرمی! صفدر علی چودھری صرف ایک نام نہیں تھا بلکہ وہ جماعت اسلامی کا انسائیکلوپیڈیا کی حیثیت رکھتے تھے۔ ان کی شخصیت کئی حوالوں سے دلوں میں ہمیشہ زندہ رہے گئی ۔ چودھری صاحب صبرو تحمل کے پیکر تھے ۔انکی شخصیت کا یہی پہلو ساری عمر غالب رہا ۔اکثر اوقات ملتان چونگی پر واقع میرے کزن کی پینٹر کی د وکان پر جماعتی پروگرامات کے بینرز لکھوانے آ جایا کرتے تھے ۔ایک مرتبہ دوکان پر کسی کام کی غرض سے آئے تو ان کے ہاتھ میں نصرت فتح علی خان کی قوالی کی ایک کیسٹ تھی۔۔ رہا نہ گیا تو۔۔ میں نے پوچھ ہی لیا کہ چودھری صاحب۔۔ آپ قوالیاں بھی سنتے ہیں۔ اس غیر متوقع سوال پر پہلے تو مسکرائے پھر بولے کہ عام افراد نے جماعت اسلامی کے لوگوں کو غلط رنگ چڑھا کر معاشرے میں پیش کیا ہے ۔ منصورہ سے محافظ ٹائون شفٹ ہو جانے کے باوجود بڑی دیر تک ٹیلی فون پر اپنے رفقاء سے رابطے میں رہتے ۔اپنے چیک اپ کے لئے قریبی اور اچھے ہسپتال چھوڑ کر صرف منصورہ ہسپتال ہی آتے تاکہ پرانے دوستوں سے ملاقات بھی ہو جائے ۔شوگر نے ان کو مفلوج کر کے رکھ دیا ۔ چودھری صاحب کی وفات سے کچھ عرصہ قبل محافظ ٹائون میں انکی رہائش گاہ پر عیادت کی غرض سے حاضری دی حق مغفرت کرئے۔ (محمد عمران الحق۔ لاہور)