پاکستان میں کوئی محفوظ پناہ گاہ نہیں سلامتی کے چیلنجز سے آگاہ ہیں:شاہد خاقان

13 جنوری 2018

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر+ نوائے وقت رپورٹ) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پاکستان نے دہشت گردی کیخلاف شاندار کامیابی حاصل کی ہے اور پاکستان کی سرزمین پر دہشت گردوں کی کوئی محفوظ پناہ گاہ موجود نہیں ہے۔ انہوں نے اسلام آباد میں نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی میں نیشنل سکیورٹی اینڈ وار کورس کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ریاست قومی سلامتی کے چیلنجوں سے بخوبی آگاہ ہے۔ اسی کے پیش نظر داخلی اور خارجی مسائل کو حل کیا جا رہا ہے۔ دہشت گردوں کے خلاف گھیرا تنگ کردیا گیا ہے اور ان کی مذموم سرگرمیاں کرنے کی صلاحیت کو کافی حد تک کم کردیا گیا ہے۔ معاشرے سے دہشت گردوں کے خفیہ ٹھکانوں اور ان کے ہمدردوں سے پاک کرنے کیلئے آپریشن ردالفساد جاری ہے۔ انہوں نے کہاکہ نہ صرف ریاستی امور پر مبنی سوچ کو معاشرتی سکیورٹی خدشات کی طرف مرکوز کیا گیا ہے بلکہ قومی سلامتی کے تصور اور اسے سمجھنے کی طرف بھی توجہ دی گئی ہے۔ انہوں نے قومی سلامتی کا تصور نکھارنے میں نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے کردار کی تعریف کی۔وزیراعظم نے کورس گریجویٹ کومبارکباد دیتے ہوئے ان پر زور دیا کہ وہ ملک کو درپیش خطرات کے خلاف قومی ردعمل کیلئے اقدام اٹھائیں۔ علاوہ ازیں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت سی پیک کیلئے قائم کابینہ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں سی پیک میں شامل توانائی، مواصلات کے جاری منصوبوں اور سی پیک سے منسلک خصوصی اکنامک زونز کے قیام کا بھی جائزہ لیا گیا۔ سیکرٹری پاور ڈویژن نے توانائی منصوبوں پر بریفنگ دی۔ تین سو میگاواٹ کے گوادر پاور پراجیکٹ کی تکمیل کا بھی جائزہ لیا گیا۔ ٹرانسمشن لائنز بچھانے کے عمل پر بھی بریفنگ دی گئی۔ چیئرمین این ایچ اے کی روڈ انفراسٹرکچر پر کمیٹی کو بریفنگ دی گئی۔ وزیراعظم نے سی پیک کی تکمیل کیلئے چینی فریقین سے رابطے کی ہدایت کی۔ سی پیک منصوبوں پر عملدرآمد اور جلد تکمیل ترجیح ہے۔ مزیدبرآں مزیدبرآں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کو ملک بھر بالخصوص دور افتادہ علاقوں میں بااعتماد اور سستے براڈ بینڈ رابطے کی سہولت کو یقینی بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت ملک کے تمام حصوں میں سستے نرخوں پر براڈ بینڈ کی سہولتوں کی فراہمی کے لئے عملی اقدامات کر رہی ہے۔ انہوں نے یہ بات مقامی ہوٹل میں وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقہ جات (فاٹا)، خیبر ، مہمند ایجنسی اور ڈی آئی خان میں پائیدار ترقیاتی منصوبوں کیلئے براڈ بینڈ کے معاہدے پر دستخط کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ وزیراعظم نے یونیورسل سپورٹ فنڈ (یو ایس ایف) کی معاونت سے ملک کے قبائلی علاقوں میں براڈ بینڈ کی سہولیات کی فراہمی کے اقدام کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس سے لوگوں کو ان کی دہلیز پر جدید سہولیات کی فراہمی کے ذریعے شہری اور دیہی علاقوں کے درمیان فرق دور کرنے میں مدد ملے گی۔