نیب اصلاحات سے متعلق بیرسٹر فروغ نسیم کی زیرصدارت اجلاس

Sep 12, 2018

اسلام آباد (جنرل رپورٹر) وفاقی وزیر برائے قانون اور انصاف بیرسٹر فروغ نسیم نے نیب اصلاحات کے سلسلہ میں نیب ٹاسک فورس میں ایک اجلاس کی صدارت کی یہ اجلاس نیب قانون میں اصلاحات لانے کے لیے تفصیلی منصوبہ بندی تیار کرنے کے لیے منعقد کیا گیا تھا ۔ اجلاس کے دوران وفاقی وزیر نے کہا کہ نیب قانون کا اصل مقصد پوری توجہ کے ساتھ میگا کرپشن کے مقابلہ کے لیے بھرپور منصوبہ بندی اور اس کو موثر بنانے کے سلسلہ میں اصلاح کرنا اور غیر ضروری ہراساں کرنے سے بچنے کے لیے چیک اینڈ بیلنس قائم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں تمام شراکت داروں کو اعتماد میں لینا ضروری ہے، نیب کو مزید با اختیار بنانے کے لیے نئے احتساب قانون کی تیاری کے وقت حمایت اور رائے کو مدنظر رکھنا ضروری ہے ۔وفاقی وزیر نے ٹیکس اور اس کی حدود کے معاملات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ نئے احتساب قانون میں ایک مثبت پیغام ٹیکس چوری سے متعلق معاملات کو متعارف کرایا جا سکتا ہے جس سے اب بدعنوان عناصر بچ نہیں سکیں گے۔اجلاس میں نیب کے ڈپٹی چیئرمین امتیاز تاجور نے قانون سازی کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ نیب قانون ایک جامع قانون ہے جس کا سپریم کورٹ اور صوبائی کورٹس کی جانب سے جائزہ لیا گیا جس میں تمام ہدایات پر عمل کیا گیا، احتساب سے کوئی بھی مستثنیٰ نہیں ہے ۔ نیب بزنس کمیونٹی کے ساتھ رابطہ میں ہے اور اس کے مثبت نتائج سامنے آنے کی امید ہے،نیب کے مرزا شہزاد اکبر پارلیمانی سیکرٹری برائے قانون ملکہ بخاری ،سیکرٹری قانون عبدالشکور پراچہ ،ایف بی آر اور اٹارنی جنرل آفس کے اعلیٰ حکام بھی اجلاس میں موجود تھے۔

مزیدخبریں