ضلع کچہری ملتان میںسہولیات کا فقدان، سائل پریشان

Sep 12, 2018

ملتان (رپورٹ محمد نوید شاہ سے) ضلع کچہری ملتان شدید گرمی اور حبس کے موسم میں سہولیات کے فقدان کے باعث شہریوں اور سائلین کے لئے رحمت کی بجائے ’’زحمت‘‘ کا روپ دھار گئی۔ ضلع کچہری میں پارکنگ سہولیات کے فقدان‘ بیٹھنے کی جگہ نہ ہونے پانی کی مناسب سہولیات کی عدم فراہمی نے شہریوں کو تکلیف کا شکار کردیا۔ حصول انصاف کے لئے آنے والے شہری شدید گرمی میں کھلے آسمان کے نیچے بیٹھنے پر مجبور ہو گئے حکومت نے جوڈیشل کمپلیکس کا منصوبہ بھی ادھورا چھوڑ دیا جبکہ موجودہ جگہ پر بھی تزئین و آرائش کا کام روک دیا گیا جس کے باعث شہری دوسرے عذاب کا شکار ہو چکے ہیں۔ شہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ شہر میں قائم کچہری کو توسیع دی جائے اور پارکنگ کے لئے پولیس لائنز کے خالی میدان عوام کے لئے مختص کئے جائیں۔ تفصیل کے مطابق 2004ء میں حکومت نے ایک عالمی ادارہ کے تعاون سے ملتان میں جوڈیشل کمپلیکس منصوبہ کی بنیاد ڈال دی تھی مگر بدقسمتی سے وہ منصوبہ بھی تاحال زیر تعمیر ہی چلا آ رہا ہے جبکہ دوسری جانب موجودہ کچہری میں توسیع کا منصوبہ بھی کھٹائی کا شکار نظر آ رہا ہے شدید گرمی اور حبس کے موسم میں ضلع کچہری میں سائلین کے لئے بیٹھنے کو کوئی سایہ دار جگہ موجود نہیں ہے اسی طرح چوک کچہری کے باہر پارکنگ کا علاقہ بھی شہریوں کے لئے درد سر بن چکا ہے۔ وکلاء کلرکس اور دیگر عملہ کی گاڑیاں‘ موٹر سائیکلیں اور ویگنیں جبکہ دور دراز کے تھانوں سے آنے والے پولیس اہلکاروں کی گاڑیاں بھی عین سڑک کے درمیان میں موجود ہوتی ہیں۔ جس سے سکول‘ کالج کے چھٹی کے اوقات میں روزانہ ٹریفک کا گھنٹوں جام رہنا بھی معمول بن چکا ہے۔ اس سلسلہ میں ضلع کچہری میں آنے والے محمد احمد‘ اور ندیم احمد مجبتیٰ نے کہا کہ اس وقت کچہری میں آنا کسی سزا سے کم نہیں ہے۔ یہاں ہم ریلیف کیلئے آتے ہیں مگر یہاں سے مزید تکلیف لیکر جاتے ہیں شہریوں محمد رمضان اور محمد اکرم نے کہا کہ دن کے وقت خصوصاً سکول کے چھٹی کے اوقات کار میں یہاں سے گزرنا کسی تکلیف سے کم نہیں ہوتا ہے۔ چوک کچہری سے 8 نمبر چونگی تک موجود پارکنگ کو ختم کر کے پارکنگ کو پولیس لائنز میں منتقل کیا جائے۔ محمد شہزاد اور نعیم الحسن نے کہا کہ کچہری میں سایہ دار جگہ نہیں ہے جس کے باعث کھلے پلاٹوں میں ہی بیٹھنا پڑتا ہے اقرار الحسن اور چراغ دین نے کہا کہ حکومت نے جوڈیشل کمپلیکس کا منصوبہ بھی ختم کردیا۔ جبکہ یہاں بھی مناسب سہولیات فراہم نہیں کی جو سراسر زیادتی ہے۔ دریں اثناء ذرائع کے مطابق نیو جوڈیشل کمپلیکس منصوبہ کے باعث موجودہ ضلع کچہری میں اس سال کوئی نیا تعمیراتی کام نہیں کرایا گیا ہے۔ ضلع کچہری میں نیا کام نہ کرانے کی وجہ ذرائع نے یہ بتائی ہے کہ اگلے چند ماہ میں کچہری کو ایک بار پھر جوڈیشل کمپلیکس میں منتقل کیا جا سکتا ہے۔ اسی طرح ضلع کچہری کی منتقلی کے خلاف تحریک چلانے والے وکلا نے اسے افواہ قرار دیا ہے اور آگاہ کیا ہے کہ بہت جلد موجودہ کچہری کو توسیع دی جائے گی۔ پارکنگ کا مسئلہ بھی باہمی افہام تفہیم سے حل کر لیا جائے گا۔

مزیدخبریں