احتساب عدالت: فواد حسن فواد کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع، صاف پانی کمپنی کیس کی مکمل رپورٹ پیش کرنے کا حکم

Sep 12, 2018

لاہور( اپنے نامہ نگار سے)احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم کے پرنسپل یکرٹری فواد حسن فواد کے جسمانی ریمانڈ میں 18 ستمبر تک توسیع کر دی ہے۔ نیب کے وکیل کا کہنا تھا کہ فواد حسن فواد نے آشیانہ کا ٹھیکہ منسوخ کر کے مالی فوائد حاصل کیے۔ کامران کیانی نے آشیانہ اقبال کے ٹھیکے کے خلاف درخواست دی ۔ کامران کیانی کی درخواست کے بعد فواد حسن فواد نے غیر قانونی طور پر ٹھیکہ منسوخ کیا۔ نیب کے تفتیشی افسر کا کہنا تھا کہ کامران کیانی کے اکائونٹ سے ڈھائی کروڑ فواد حسن فواد کی بھابھی انجم حسن کے اکائونٹ میں ٹرانسفر کیے گئے ۔ ڈھائی کروڑ سے پلاٹ خریدا گیا جس میں فواد حسن فواد شراکت دار ہیں۔ نیب پراسکیوٹر وارث جنجوعہ کا کہنا تھا فواد حسن فواد سے دوران تفتیش کئی اہم باتوں کا انکشاف ہوا جس کی تحقیق کرنا باقی ہے۔ ملزم کی بیگم نے پلاٹ اور پلازہ خریدا اس کی تحقیق کی جارہی ہے۔ احتساب عدالت نے صاف پانی کمپنی کیس کی سماعت کی۔ فاضل عدالت نے تفتیشی افسر کو مکمل رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔ فاضل عدالت نے سماعت کے بعدملزمان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 26 ستمبر تک توسیع کر دی۔ نیب کی جانب سے عدالت میں قمر الاسلام، وسیم اجمل اورڈاکٹر ظہیر وغیرہ کو پیش کیا گیا۔

مزیدخبریں