بوائز پرائمری سکول کا اجراء کیا جائے

Sep 12, 2018

مکرمی! ہمارے محلہ کوٹ کمبوہ خورد اور اس کی ملحقہ آبادیوں جھگیاں شہاب دین‘ گنج بخش پارک‘ رحمانیہ کالونی جھگیاں ناگرہ بکر منڈی‘ غفور پارک میں غریب دہاڑی دار اور متوسط طبقہ کے لوگ رہائش پذیر ہیں۔ افسوس کہ اس دور جدید میں بھی یہاں پر کوئی سرکاری سکول نہیں ہے۔ جب تعلیمی ادارہ ہی نہیں ہوگا تو بچہ پڑھے گا کیسے؟ جبکہ تعلیم حاصل کرنا ہر بچے کا حق ہے۔ گورنمنٹ کا سکول نہ ہونے کی وجہ سے مجبوراً کچھ والدین ہمت کرکے پرائیویٹ سکولوں میں بچوں کو داخل کرواتے ہیں‘ جن کی ماہانہ فیس اور دیگر اخراجات ان کی برداشت سے باہر ہونے کی وجہ سے ان کے ہونہار بچے نہ چاہتے ہوئے بھی تعلیم کو ادھورا چھوڑنے پر مجبور ہو جاتے ہیں جس سے ان کا مستقبل تاریک ہو جاتا ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ ان بستیوں پر خصوصی توجہ دی جائے اور یہاں پر فوراً سکول کا اجراء کیا جائے تاکہ ہمارے بچے بھی زیور تعلیم سے آراستہ ہو سکیں۔بکرمنڈی مذبحہ خانہ جوکہ اب کوٹ کمبوہ سے شاہ پور کانجرہ شفٹ ہو گیا ہے‘ اس جگہ کا محل وقوع سکول کیلئے نہایت موزوں ہے۔(چودھری محمد اکرم اللہ جنرل کونسلر وارڈ نمبر 5 یوسی 102 لاہور)

مزیدخبریں