فیس کی عدم ادائیگی، ریلوے کا مین شاہراہوں پر پھاٹک فروخت کرنے کا فیصلہ

12 مارچ 2013

لاہور (میاں علی افضل سے ) محکمہ ریلوے اور سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کے درمیان پھاٹکوں کی 3کروڑ 10لاکھ روپے فیس کی عدم ادائیگی پر معاملات شدت اختیار کر گئے ہیں، پیسوں کی عدم ادائیگی پر محکمہ ریلوے نے صوبائی دارالحکومت سمیت پنجاب کے دوسرے اضلاع میں مین شاہراﺅں پر موجود پھاٹکوں کو سیل کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے جس سے ان پھاٹکوں سے عام ٹریفک کے گزرنے پر پابندی ہو گی، پھاٹکوں کی بندش سے شہریوں کو شدید ٹریفک مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ معلوم ہوا ہے کہ صوبائی دارالحکومت کی اہم شاہراﺅں پر کراسنگ کے لئے سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کی جانب سے محکمہ ریلوے کے ساتھ معاہدے کے تحت پھاٹک بنائے گئے جس کے بدلے سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ ریلوے زمین کے استعمال پر طے شدہ رقم کی ادائیگی کی پابند تھی محکمہ ریلوے کی جانب سے پیسوں کی ادائیگی کے سلسلہ میں سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ سے متعدد بار رابطہ کیاگیا لیکن مناسب جواب نہ ملنے پر مین شاہراﺅں پر موجود پھاٹک بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ محکمہ ریلوے کی جانب سے ابتدائی طور پر پھاٹک نمبر 5نزد راوی پل، پھاٹک نمبر 5/Bتاج باغ، پھاٹک نمبر 41/Aنزد کوٹ لکھپت منڈی ، پھاٹک نمبر 43/Cسیون اپ گلبرگ ،پھاٹک نمبر 47بل مقابل میوگارڈن، پھاٹک نمبر 7سائیں صادق دربار اور پھاٹک نمبر 3مغل پورہ کو بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور 16مارچ کی ڈیڈ لائن دیدی گئی ہے معلوم ہوا ہے کہ محکمہ ریلوے کی جانب سے پنجاب بھر میں ریلوے زمین پر لگے پھاٹکوں کی عدم ادائیگی کا تمام ریکارڈ جمع کرنے اور متعلقہ اداروں سے ریکوری کےلئے رابطے تیز کرنے کے بھی احکامات جاری کر دئیے گئے۔