قوم بھارت کو پسندیدہ قرار دینے کی سخت مخالف ہے‘ سیاسی جماعتیں اپنا موقف واضح کریں : حافظ سعید

12 مارچ 2013
قوم بھارت کو پسندیدہ قرار دینے کی سخت مخالف ہے‘ سیاسی جماعتیں اپنا موقف واضح کریں : حافظ سعید

چیچہ وطنی (نامہ نگار)امیر جماعة الدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ پاکستانی قوم بھارت کو پسندیدہ ملک قرار دینے کی سخت مخالف ہے اور وہ سیاسی جماعتوں کابھی ایم ایف این کے معاملہ پر واضح مو¿قف جاننا چاہتی ہے ۔بھارت نے گذشتہ گیارہ سالوں میں افغانستان میں امریکی موجودگی کا فائدہ اٹھا کرپورے پاکستان میں تخریب کاری کے نئے ریکارڈ قائم کئے ہیں،مشرقی تیمور اور سوڈان کے مسئلہ پرفوراً حرکت میں آنے والے بیرونی قوتیں کشمیر کے معاملے پر خاموش کیوں ہیں؟بھارت مقبوضہ کشمیر میں پاکستانی دریاو¿ں پر ڈیموں کی تعمیر کو ہمارے خلاف واٹر بم کے طور پر استعمال کر رہا ہے ۔ان خیالات کا ظہار امیر جماعة الدعوةپاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے گزشتہ رات شہر والا پل چیچہ وطنی میں غزوہ ہند کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر جماعة الدعوة سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمان مکی،پاکستان واٹر موومنٹ کے چیئرمین حافظ سیف اللہ منصور،مولانا محمد یوسف ربانی،مولانا رمضان منظور ودیگرنے بھی خطاب کیا۔اس موقع پر تمام تر مکاتب فکر اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد موجود تھے۔ شرکا ءکی جانب سے سبیلنا سبیلنا الجہاد الجہاد‘ کشمیریوں سے رشتہ کیا‘ لاالہ الااللہ اورحافظ محمد سعید قدم بڑھاﺅ ہم تمہارے ساتھ ہیں ‘ جیسے زور دارنعرے لگائے جاتے رہے۔حافظ محمد سعید نے اپنے خطاب میں کہا کہ موجودہ حکومت کے اس اعلان کے بعد کہ بھارت کو پسندیدہ ملک کا درجہ دینے کا فیصلہ آئندہ حکومت کرےگی،عوام تمام سیاسی جماعتوں سے اس ایشو پر واضح مو¿قف چاہتی ہے ،کیونکہ پاکستان قوم کسی طور پر بھی لاکھوںمسلمانوں کے قاتل بھارت کو پسندیدہ ترین ملک کا درجہ دینے کے حق میں نہیں ہے ۔بھارت نے پاکستان کے ساتھ ازلی دشمنوں والا رویہ اختیار کر رکھا ہے اور ملک بھر میں جاری دہشت گردی و تخریب کاری میں واضح طور پر اسکا ہاتھ ہے ۔اس لئے وہ پاکستان کادوست نہیں صرف دشمن ہی ہو سکتا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں پاکستانی دریاﺅں پر غیر قانونی ڈیم بنا کر انکوپاکستان کے خلاف واٹر بم کے طور پر استعمال کر رہا ہے اور بغیرجنگ لڑے پاکستان کو فتح کرنے کے خواب دیکھ رہا ہے ۔ہم سمجھتے ہیں کہ مسئلہ کشمیر صرف کشمیریوں کا ہی نہیں پاکستان کےلئے بھی زندگی و موت کا مسئلہ بن چکا ہے ۔ مظلوم کشمیریوں کو کسی صورت اکیلا نہیں چھوڑیں گے۔