مسلم لیگ ن تحریک انصاف کے ہر اقدام کی نقل کرتی ہے: عمران خان

12 مارچ 2013

اسلام آباد (ثناءنیوز) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ ملکی مفاد میں ہے ، کرپٹ سیاسی جماعتیں متحد ہو کر بھی تحریک انصاف کا مقابلہ نہیں کر سکتیں، دو نمبر سیاستدان کو پارٹی ٹکٹ نہیں ملے گا، چوری اور کرپشن کے بے نقاب ہونے کے ڈر سے سٹیٹس کو کے حامی سیاستدان اثاثے ڈکلیئر نہیں کر رہے، انہوں نے کہا کہ جس کا جینا مرنا پاکستان کے ساتھ نہیں ہے اس کو پاکستان میں سیاست کرنے کا حق نہیں۔ حکمران عیاشیوں میں مصروف ہیں، لوگ غربت اور بے روز گاری سے تنگ آکر گردے اور اپنے لخت جگر فروخت کرنے پر مجبور ہیں۔ پیر کو مرکزی میڈیا سیل سے جاری بیان میں عمران خان نے کہا کہ حکمرانی اللہ کی طرف سے ذمہ داری ہوتی ہے اور اسے متعلق پوچھا جائے گا۔ تحریک انصاف کے پاس کرپشن روکنے کیلئے مضبوط پالیسی ہے جس کے تحت آزاد اور مضبوط نیب تشکیل دیا جائے گا جو سیاست سے پاک ہو گا اور قانون دانوں کو شامل کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ قومی اداروں کو سیاست سے پاک اور عدالتوں کو مضبوط بنا کر ملک سے کرپشن کا خاتمہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف اقتدار میں آکر قومی اداروں جن میں پی آئی اے، واپڈا، سٹیل ملز، ریلوے سمیت دیگر کو وزارتوں سے الگ کر کے ان کے ایگزیکٹو بورڈ بنائیں گے جو میرٹ پر ادارے چلائیں گے۔ عمران خان نے کہا کہ مسلم لیگ نواز تحریک انصاف کے ہر اقدام کی نقل کرتی ہے لیکن وہ تحریک انصاف کی طرح انٹرا پارٹی الیکشن نہیں کروائے گی۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے پارٹی الیکشن ملک سے موروثی سیاست کے خاتمے کا باعث بنیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سلیکشن کے ذریعے پارٹی میں عہدے لینے والے پارٹی سربراہوں کے غلام ہوتے ہیں لیکن تحریک انصاف کے پارٹی الیکشن کی وجہ سے اب پارٹی میری نہیں منتخب کارکنوں کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ نواز دہشت گردوں کے ساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کر رہی ہے جس کی وجہ سے پنجاب میں حالات خراب ہیں۔ میں کسی سے کمپرومائز نہیں کروں گا۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ ساری جماعتیں تحریک انصاف سے اتحاد کرنا چاہتی ہیں لیکن اگر ان کے ساتھ اتحاد کر لیا تو ملک میں تبدیلی نہیں آئی گی۔ انہوں نے کہا کہ پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ ملکی مفاد میں ہے ۔ انہوں نے کہا پارٹی الیکشن نے غیر نظریاتی لوگوں کی چھانٹی کر دی۔ تحریک انصاف اقتدار میں آکر غریب کسانوں پر ظلم نہیں کرنے دے گی اور اس حوالے سے سخت قانون سازی کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ الیکشن میں دھاندلی روکنے اور پارٹی منشور گھر گھر پہنچانے کیلئے دس لاکھ تبدیلی رضا کار لائیں گے۔ دریں اثناءایک نجی ٹی وی کو دئیے انٹرویو میں عمران خان نے کہا کہ تحریک انصاف کارکنوں کی پارٹی دوسری جماعتوں میں بادشاہت کا سسٹم ہے ، پاکستان میں سیاست کرنے والوں کی جائےدادیں ملک سے باہر ہیں، ہم نیا پاکستان بنائیں گے جہاں قانون کی حکمرانی ہو گی۔ اداروں میں سیاسی اثر و رسوخ نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ شوکت خانم ہسپتال غریبوں کے لئے بنایا اس میں ایک نظام ہے یہاں کسی کی سفارش نہیں چلتی۔