ادویات کی مناسب قیمتوں میں کمپنیوں کے مالکان رکاوٹ ہیں ، قائمہ کمیٹی

12 مارچ 2013

اسلام آباد (وقائع نگار ) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نیشنل ریگولیشنز اینڈ سروسز نے کہا ہے کہ ہیلتھ کیئر پالیسی پر کام جاری ہے جلد سینٹ میں بل پیش کیا جائے گا ۔ دوائیوں کی قیمتوں کا تعین کرنے میں کئی رکاوٹیں جس وجہ سے آج تک قیمتوں سے متعلقہ پالیسی کا نہیں بنائی جا سکی ہے ۔کمیٹی کا کا اجلاس گزشتہ روز سینٹر ظفر علی شاہ کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاو¿س میں ہو ا ۔ کمیٹی میں سینٹر حسیب خان نے کہا کہ ڈرگ ریگو لیٹری اتھا رٹی بنایا گیا ہے اس کا کوئی طریقہ کار نہیں ہے دوائیوں کے لیے کوئی طریقہ کار نہیں ہے۔ انہوں نے کہا ملٹی نیشنل اینڈ نیشنل کمپنیوں دونوں کو عالمی قوانین پر عمل کرنا چاہئے اس سلسلہ میں دونوں میں کسی قسم کا فرق نہیں ہو نا چائیے۔ ادویات کو معیاری بنائے جانے کے لیے نئی پالیسی بنانے کی ضرورت ہے ہیلتھ کیئر پالیسی پر کام کر رہا ہوں جلد ایوان بالا میں پیش کروں گا وزارت کے سیریٹری نے بتایا کہ حکومت مناسب قیمتیں لانا چاہتی ہے تاہم کمپنیوں کے مالکان ایسا نہیں چاہتے وہ منافع کمانا چاہتے ہیں جس وجہ سے سب ابھی تک قیمتوں سے متعلقہ پالیسی کا تعین ہی نہیں کیا گیا ہے تاہم پرائسنگ پالیسی کا جلد تشکیل دے دیا جائے گا ۔ فارما ایسوسی ایشن کے چیئرمین نے کہا کہ ما لیکیول ون پالیسی مقرر کی جانی چائیے اور اس مقصد کے لیے تمام اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت ہونی چائیے اس پالیسی کو تمام کمیٹی ممبرز نے مسترد کر دیا۔ چیئرمین ظفر علی شاہ نے ہدایات جاری کیں کہ اس کمیٹی میں جو بھی فیصلے لیے جا تے ہیں تمام ممبرز کی جانب سے انہیں سنجیدہ لیا جانا چائیے ۔