ملائشیا‘ انڈونیشیا سے چائے کی درآمد پر 40 کروڑ کی ٹیکس چوری کا انکشاف

12 مارچ 2013

کراچی (اے پی اے) ملائشیا اور انڈونیشیا سے پاکستان میں درآمدکی جانے والی چائے پر 40 کروڑ روپے مالیت کے ٹیکس چوری کاانکشاف ہواہے۔ذرائع کے مطابق ماڈل کسٹمزکلکٹریٹ پیکس کے شعبہ آراینڈڈی کی جانب سے درآمدکنندہ موقیت برادرزکے درآمدی کنسائمنٹس کا ڈیٹاچیک کرنے پر معلوم ہوا ہے کہ چائے کے مذکورہ کنسائمنٹس کے درآمدکنندہ نے خود کو مینوفیکچرر ظاہر کرتے ہوئے سال 2008تا 2013 کے دوران چائے کے 2303 درآمدی کنسائمنٹس کلیئرکرکے 40کروڑمالیت کے ایڈیشنل سیلزٹیکس اورانکم ٹیکس کی چوری کی جبکہ حقیقت یہ ہے کہ میسرز موقیت برادرز خالصتا ایک کمرشل امپورٹرہے۔ذرائع نے بتایاکہ مذکورہ درآمدکنندہ نے گزشتہ پانچ سال کے دوران 16کسٹمزکلیئرنگ ایجنٹس کی ملی بھگت سے پیکس کے ذریعے 1606اور”وی بوک“کے ذریعے 697چائے کے کنسائمنٹس کلیئرکروائے ہیں، ذرائع نے بتایاکہ ایمپلائز اولڈ ایج بینیفٹ (ای او بی آئی)اورسائٹ ایسوسی ایشن نے بھی مذکورہ درآمدکنندہ کے کمرشل امپورٹرہونے کی تصدیق کی ہے، علاوہ ازیں شعبہ آراینڈڈی کی ٹیم نے میسرزالیکٹراسسٹم پرائیویٹ لمیٹڈ کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے ٹیکس چوری کی ایک اور کوشش ناکام بنادی ہے۔