ہر سال پبلک سیکٹر کے اداروں کو 400 ارب کا نقصان ہو رہا ہے، محمد علی

12 مارچ 2013

لاہور (کامرس رپورٹر)سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن پاکستان کے چیئرمین محمد علی نے کہا ہے کہ ہر سال پبلک سیکٹر کے اداروں کو 400ارب روپے کا نقصان ہو رہا ہے ۔سٹاک مارکیٹ میں ان سائیڈ ٹریڈنگ کی سخت سزا ہے ۔سرمایہ کاروں کے حقوق کا تحفظ ہماری اولین ترجیح ہے۔سرمایہ کار سٹاک مارکیٹ کے ذریعے جون 2014ءتک اپنا کالا دھن سفید کروا سکتے ہیں۔سرمایہ کاری کم از کم 120دن تک لازمی کرنی ہو گی۔ایس ای سی پی کی تنظیم نو کی جا رہی ہے ۔ڈی میوچلائزیشن سے سٹاک مارکیٹ کی کارکردگی بہتر ہوئی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کے روز اپٹما ہاﺅس میں لاہور اکنامک جرنلسٹس ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ایسوسی ایشن کے صدر فاخر ملک،سینئر صحافی احمد مسعود،منصور احمد اور ناصر بلوچ سمیت دیگر موجود تھے۔ایس ای سی پی کے چیئرمین نے بتایا کہ جو کمپنیاں قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی کرتی ہیں انہیں ڈی لسٹ کیا جاتا ہے اور چھوٹے حصص یافتگان کو پورا موقع دیا جاتا ہے کہ وہ اپنے حصص فروخت کرلیں۔