کراچی سٹاک مارکیٹ میں زبردست مندا‘ 100 انڈیکس 4 نفسیاتی حدوں سے گر گیا

12 مارچ 2013
کراچی سٹاک مارکیٹ میں زبردست مندا‘ 100 انڈیکس 4 نفسیاتی حدوں سے گر گیا

کراچی (مارکیٹ رپورٹر)پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبے پر دستخط کے بعد امریکا اور یورپی یونین کی جانب سے ممکنہ پابندیوں کے خدشہ کے باعث پیر کو کراچی اسٹاک ایکس چینج میں رواں مالی سال کی سب سے بڑی مندی ریکارڈ کی گئی اور کے ایس ای 100 انڈیکس بیک وقت 17700,17800,17900اور 17600کی نفسیاتی حدوں سے گرگیا ۔ سرمایہ کاری مالیت میں93 ارب54 کروڑ روپے سے زائد کی کمی، کاروباری حجم گزشتہ روز کی نسبت 0.50 فیصد کم جبکہ 81.89 فیصد حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی۔ پاک ایران گیس پائپ لائن پر دستخط کے بعد امریکا اور یورپی یونین کی جانب سے ممکنہ پابندیوں کے باعث مقامی سرمایہ کار گروپوں سے اپنے حصص فروخت کرنے کو ترجیح دی جس کے نتیجے میں تیزی کے اثرات زائل ہوگئے اور ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای100انڈیکس 17400کی نچلی سطح پر بھی دیکھا گیا ۔ مارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس441.62 پوائنٹس کمی سے 17522.56 پوائنٹس پر بند ہوا۔ مجموعی طور پر348 کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا جن میں سے 51 کمپنیوں کے حصص کے بھاﺅ میں اضافہ،285 کمپنیوں کے حصص کے بھاﺅ میں کمی جبکہ 12 کمپنیوں کے حصص کے بھاﺅ میں استحکام رہا۔ سرمایہ کاری مالیت میں93 ارب54 کروڑ18 لاکھ 83 ہزار524 روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جبکہ سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت گھٹ کر 43 کھرب68 ارب 57 کروڑ 34 لاکھ 97ہزار 907 روپے ہوگئی۔ مجموعی طور پر کاروباری حجم23 کروڑ 46 لاکھ 55 ہزار920 شیئرز رہا جوجمعہ کے مقابلے میں11 لاکھ 91 ہزار860 شیئرز کم ہے۔ لاہور سٹاک ایکسچینج میں بھی مندی کا رجحان رہا - مجموعی طور پر91کمپنیوں کا کاروبارہوا 7 کمپنیوں کے حصص میں اضافہ۔ 36 کمپنیوں کے حصص میں کمی جبکہ 48کمپنیوں کے حصص میں استحکام رہا۔ ایل ایس ای 25 انڈیکس 144.16پوائینٹس کی کمی کے ساتھ 4119.83 پربندہوا۔ مارکیٹ میں کل 36لاکھ 88 ہزار 600حصص کا کاروبار ہو ا۔