این اے 239 کے فارم 45 سے متعلق کیس میں متعلقہ حکام سے رپورٹ طلب

Sep 11, 2018

اسلام آباد (خصوصی نمائندہ) الیکشن کمیشن نے حلقہ این اے 239کے پریذائیڈنگ افسروں کے دستخط شدہ اور بغیر دستخط والے فارم 45 کے معاملے پر اپنے متعلقہ حکام سے اٹھارہ ستمبر تک رپورٹ طلب کر لی ۔ درخواست گزار سہیل منصور خواجہ کے وکیل نے دلائل دیئے کہ ریٹرننگ افسر کی طرف سے بغیر دستخطوں والے فارم5 4ویب سائٹ پر جاری کئے گئے، دستخط شدہ فارم 45 کے مطابق ایک پولنگ اسٹیشن پر ہمارے ووٹ 358ہیں جبکہ بغیر دستخط والے فارم پر ہمیں23ووٹ دئے گئے ہیں،صرف 5پولنگ اسٹیشنوں کے فارم 45پر دستخط نہیں ہیں ، جن میں تبدیلی کی گئی ہے ، ریٹرننگ افسر کہہ رہے ہیں کہ غلطی ہو گئی ہے ، یہ غلطی نہیں بے ایمانی ہے ، دستخط شدہ فارم45کے مطابق نتائج بنائے جائیں۔ الیکشن کمیشن میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 239 کے فارم 45 سے متعلق درخواست پر چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے سماعت کی ، سماعت کے دوران درخواست گزار سہیل منصور خواجہ اور ان کے وکیل پیش ہوئے جبکہ این اے 239کے ریٹرننگ افسر بھی الیکشن کمیشن کے سامنے پیش ہوئے، سہیل منصور خواجہ کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ریٹرننگ افسر کی طرف سے بغیر دستخطوں کے فارم5 4ویب سائٹ پر جاری کئے گئے، یہ پریذائیڈنگ افسر کے دستخط کے بغیر فارم 45ویب سائٹ پر کیسے دے سکتے ہیں۔

مزیدخبریں