پنجاب یوتھ فلم فیسٹیول کا اختتام، 6 فلموں کو بہترین ایوارڈ دیا گیا

11 مارچ 2014
پنجاب یوتھ فلم فیسٹیول کا اختتام، 6 فلموں کو بہترین ایوارڈ دیا گیا

لاہور(سپورٹس رپورٹر) پنجاب یوتھ فیسٹیول کے زیراہتمام ہونے والی پنجاب یوتھ فلم فیسٹیول اختتام کو پہنچ گیا ۔ الحمراء کلچرل کمپلیکس میں ہونے والی تقریب کے اختتام پر 6 کیٹگریز کی بہترین فلموں کو ایوارڈ سے نوازاگیا۔ تقریب کے مہمان خصوصی صوبائی وزیر کھیل و تعلیم رانا مشہود احمد خاں تھے جبکہ ڈی جی سپورٹس بورڈ پنجاب عثمان انور اور  رضوان بٹ بھی تقریب میں شریک تھے۔ مختلف تعلیمی اداروں کے باصلاحیت طلبہ نے مختلف کیٹیگریز میں اپنی بنائی گئی فلموں کی نمائش کی جس کے بعد جیوری نے بہترین فلموں کو ایوارڈ کے لئے منتخب کیا۔ یوتھ فلم فیسٹیول میں جن فلموں کو ایواڈ کے لئے منتخب کیا اس میںفکشن فلم ایوارڈ ــ’’لینڈ آف فائرفلائز‘‘  فلم نے جیتا جسے این سی اے کے ملٹی میڈیا ڈیپارٹمنٹ کے ہارون حبیب نے ڈائریکٹ کیا تھا، اسی کیٹگری کی دوسری بہترین فلم ’کالو‘ ٹھہری جسے نوید انجم نے ڈائریکٹ کیا۔ بہترین ڈاکومنٹری فلم کا اعزاز این سی اے فلم اینڈ ٹی وی ڈیپارٹمنٹ سے تعلق رکھنے والے مرتضیٰ مارٹ کی ڈائریکٹ کی ہوئی ’نیرسر‘  کے حصہ میں آیا۔ دوسری بہترین فلم کا اعزاز بھی این سی اے کے عدنان کاردار کی فلم ’شیدی بادشاہ‘کے حصے میں آیا۔ شارٹ فلم کی کیٹگری میںآرایم نعیم کی فلم ‘فائنل ‘ نے پہلا انعام حاصل کیاجبکہ فرانسیز لیجویٹ کی فلم ’’ڈپریسڈگرل‘‘ نے دوسرا انعام حاصل کیا۔ اینی میٹیڈ فلم کیٹگری میں زینب المائے کی فلم’لائٹ آف لائف ‘نے پہلی پوزیشن حاصل کی جبکہ گریجورڈشوبے کی فلم ’نیور ڈرائیو اے کار ‘نے دوسری پوزیشن حاصل کی ۔ شارٹ مووی کیٹگری میں کنیئرڈ کالج کی اقصیٰ مسعود کی فلم ’امید سحر ‘ پہلے نمبر پر آئی جبکہ دوسری پوزیشن بھی کینئرڈ کالج کی انعم جسٹن کے حصے آئی جنہوں نے’زندگی ایک امید ‘ کے نام پر فلم بنائی۔ ایکسپیر یمنٹل فلم کی کیٹگری میں ہیڈل کلیمن کی فلم ’’اپریوچ ‘‘ نے پہلا انعام حاصل کیا جبکہ وشال راجپوت کی فلم ’انجان لوگ گمنام کہانی‘دوسرے نمبر پر رہی۔

روحانی شادی....

شادی کام ہی روحانی ہے لیکن چھپن چھپائی نے اسے بدنامی بنا دیا ہے۔ مرد جب چاہے ...