ملک میں الیہ بارشوں کے سلسلے کے بعد دریائے چناب ، مرالہ اور متعدد نالوں میں نچلے درجے کا سیلاب ہے، درجنوں دیہات کو وارننگ جاری کردی گئی ہے

11 جولائی 2015 (13:56)

ظفر وال کے قریب نالہ ڈیک میں طغیانی سے دیولی کے مقام سے بند ٹوٹ گیا،،ہیڈ مرالہ کے مقام پردریائے چناب میں درمیانے درجے کا سیلاب ہے، پانی کا بہاﺅ ایک لاکھ پچاس ہزارکیوسک سے تجاوزکرگیا جبکہ پانی کی مقدار میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔دریائے چناب میں خانکی اور قادر آباد کے مقام پر درمیانے درجے کا سیلاب ہے،بارشوں کے باعث دریائے جہلم اور سندھ کی سطح میں بھی اضافہ ہورہا ہے،دوسری جانب نالہ ڈیک بھی چڑھ گیا،پسرورمیں ضلعی انتظامیہ نے فلڈ وارننگ جاری کردی ، نالہ لئی میں گوالمنڈی کے مقام پر پانی کی سطح سات فٹ تک بلند ہوگئی ۔پشاور میں مون سون کی بارشوں اور سیلاب کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر ریڈ الرٹ جاری کر دیا گیا ، متعلقہ تمام اداروں کی چھٹیاں منسوخ کر کے ندی نالوں کی صفائی اور تجاوزات کے خاتمے کا احکامات جاری کر دیئے گئے ۔

صوبائی ڈیزاسٹرمینجمنٹ اتھارئی کا کہنا ہے کہ خیبرپی کے کے ندی نالوں اوردریاؤں میں کہیں درمیانے اورکہیں نچلے درجے کاسیلاب ہے

پی ڈی ایم اے حکام کے مطابق ادیزئی پل کےقریب دریائےادیزئی میں نچلےدرجےکا سیلاب ہے۔دریائےادیزئی میں پانی کا بہاؤ اڑتالیس ہزارچارسوچونسٹھ کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے۔ نالہ کلپانی میں بغدادہ مردان کےقریب پانی کااخراج بتیس ہزارتین سو اٹھہتر کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے۔ بغدادہ مردان کے قریب نالہ کلپانی میں درمیانے درجے کا سیلاب ہے جبکہ چوکی رسالپور کے قریب بھی نالہ کلپانی میں درمیانےدرجے کاسیلاب ہے۔ نالہ کلپانی میں چوکی رسالپور کے قریب پانی کابہاؤدس ہزارچارسوانہتر کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے۔ پی ڈی ایم اے حکام کا کہنا ہے کہ دریائےکابل میں نوشہرہ کےمقام پر درمیانےدرجےکاسیلاب ہے۔ نوشہرہ کےمقام پردریائےکابل میں پانی کا اخراج ایک لاکھ دوہزارآٹھ سوکیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے

نارووال میں شدید بارشوں کے باعث نالہ ڈیک میں طغیانی سے درجنوں دیہات زیر آب آ گئے جبکہ چھے دیہاتوں کا دوسرے علاقوں سے رابطہ منقطع ہوگیا،شدید بارشوں کے باعث سینکڑوں ایکڑپرکھڑی فضلیں بھی تباہ ہوگئیں

موسلا دھاربارشوں کے باعث برساتی نالہ ڈیک میں شدید بارشوں سے طغیانی آگئی،نالہ ڈیک میں پانی کی گنجائش 33ہزار کیوسک ہے جبکہ سیلابی ریلے کی بلند ترین سطح بھی 33ہزار کیوسک تک جا پہنچی ہے ،جس سے کسی بھی وقت نالہ ڈیک کا بند ٹوٹنے کا خطرہ ہے، سیلابی پانی سے ضلع نارووال کے نوادے،سہوال،بڈھا ترگ،کملے،جستی والا انچا،جھنڈیالہ ،جستی بلے،کملے ،حسن بھٹیاں ،نڈالہ،پھلرلوہاں اورسیر باجوہ سمیت درجن سے زائد دیہات زیر آب آگئے ،جبکہ چھے دیہاتوں کا دیگر علاقوں سے رابطہ منقطع ہونےسے سینکڑوں افراد گھروں میں محصور ہوگئے ،نالہ ڈیک میں اونچے درجے کے سیلاب کے باعث کھیتوں میں کھڑی سینکڑوں ایکڑ پر فصلیں بھی زیر آب آچکی ہے ،سیلابی پانی کی سطح مسلسل بلند ہونے کی وجہ سے تین دیہاتوں بڈھاترگ ،جستی والا اور کملے کے قبرستان بھی سیلاب میں ڈوب چکے ہیں، ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر کے مطابق ناروال کےچھے دیہاتوں میں پھنسے سینکڑوں افراد کوکشتیوں کے زریعے محفوظ مقامات پر منتقل کر نے کیلئے ریسکیو آپریشن شروع کر دیاگیا ہے 

سمبڑیال میں نالہ ایک کا بند ٹوٹنے سےپانی کئی دیہات میں داخل ہوگیا جبکہ بڑےرقبے پرکھڑی فصلیں بھی خراب ہوگئیں۔

سمبڑیال،سیالکوٹ اورنواحی علاقوں میں موسلا دھار بارش سے نالہ ایک کا بند ٹوٹ گیا جس کےباعث پانی بھوپال والا، کٹھیالہ، گڈیالہ مغربی اور سہووالا سمیت کئی دیہات میں داخل ہوگیا۔نالے کےپانی سے بڑے رقبے پرکھڑی فصلوں کو بھی نقصان پہنچا۔محکمہ انہار کا عملہ مقامی افراد کی مدد سے بند کی مرمت کا کام کررہا ہے۔مقامی افراد کا کہنا ہے کہ محکمہ انہار کا عملہ بروقت پہچ جاتا تو اتنا نقصان نہ ہوتا۔نالہ ایک میں پانی کی سطح بلند ہونے سے قریبی دیہات کے مکینوں نے محفوظ مقامات پرنقل مکانی شروع کردی ہے۔