پاکستان سے سٹرٹیجک شراکت داری ضروی‘ فوجی امداد جاری رہنی چاہئے: امریکی جنرل

11 جولائی 2015

واشنگٹن(اے این این+آن لائن+ نمائندہ خصوصی)امریکی فوج کے جوائنٹ چیفس آف سٹاف جنرل جوزف ڈنفورڈ نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان دہشتگردی کو فروغ دے رہاہے۔ سینیٹ آرمڈ سروسز کمیٹی کو بریفنگ کی مزید تفصیلات کے مطابق جنرل جوزف نے پاکستان پر الزام عائد کیا ہے کہ پاکستان دہشتگردوں کے ٹھکانوں کو قومی سلامتی پالیسی کے لیے بطور ہتھیار استعمال کررہاہے ۔امریکی فوج کے نائب سربراہ نے امریکی سینیٹ کے قانون سازوں کو بتایاکہ اگرچہ امریکہ اور پاکستان کے ایشوز میں بہت فرق ہے لیکن پھر بھی اسلام آباد کی مالی اور فوجی امداد جاری رہنی چاہیے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کے ساتھ تعلقات امریکی قومی سلامتی کے مفادات کے لیے اہم ہیں۔ڈنفورڈ نے کہاکہ القاعدہ کو شکست ،پاکستان کے استحکا م اورافغانستان میں دیرپا امن کے حصول کیلئے امریکہ کو پاکستان کے ساتھ اپنا تعاون جاری رکھنا ہوگا ۔ایک سوا ل کے جواب میں امریکی جنرل نے کہاکہ پاکستان نے القاعدہ اور دوسری دہشتگرد تنظیموں کے خلاف بھرپور تعاون کیا ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کے شمالی وزیرستان اور ملک کے دوسرے مغربی علاقوں میں شروع کیے گئے آپریشن ضرب عضب کے نتیجے میں دہشتگرد منتشر ہوچکے ہیں جو امریکی اہلکاروں اور افغانستان میں مقاصد کے حصول کیلئے بہت بڑا خطرہ بن چکے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ہم ’’ڈومور‘‘کے ذریعے پاکستان کے اتحاد میں اپنا کام جاری رکھیں گے ۔ پاکستان کے ساتھ پائیدار پارٹنرشپ امریکہ کے مفاد میں ہے۔ امریکہ کو پاکستانی فوج کے ساتھ کام جاری رکھنا ہوگا۔ ان کا کہنا تھا قومی سلامتی کے لیے روس کو نمبر ایک اور چین کو نمبر دو خطرہ سمجھتے ہیں۔ انہوں نے یوکرائن کو ہتھیاروں کی فراہمی کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ انکے بغیر وہ روسی جارحیت کے خلاف اپنا دفاع نہیں کر پائیں گے۔