نواز‘ مودی ملاقات مثبت پیشرفت‘ مسائل مذاکرات سے حل کیے جائیں: امریکہ ‘بانکی مون کا خیرمقدم

11 جولائی 2015
نواز‘ مودی ملاقات مثبت پیشرفت‘ مسائل مذاکرات سے حل کیے جائیں: امریکہ ‘بانکی مون کا خیرمقدم

واشنگٹن (آن لائن+ اے پی پی) امریکہ نے پاکستان اور بھارت کے وزرائے اعظم کی روس کے شہر اوفا میں ملاقات کا خیرمقدم کیا ہے۔ وائٹ ہائوس کے ترجمان کا کہنا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے وزرائے اعظم کی ملاقات مثبت پیشرفت ہے۔ ترجمان کا مزید کہنا ہے کہ امریکہ چاہتا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی میں کمی ہو، دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی سے کسی کو فائدہ نہیں ہوگا۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ امر یکہ دونوں ممالک کے درمیان تنازعات کے حل کیلئے مذاکرات کا حامی ہے اور اس کی بھرپور حمایت کرتا ہے، دونوں ممالک مذاکرات سے مسائل حل کریں۔ جنوبی ایشیا کے خطے میں کشیدگی دونوں پڑوسی ممالک میں سے کسی کے بھی مفاد میں نہیں۔ امریکہ دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کے خاتمہ کیلئے کئے گئے کسی بھی اقدام کی حمایت کرتا ہے اور یہ امریکہ کی طویل المیعاد پالیسی ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ کشیدگی کم ہو اور ہماری خواہش ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان تصفیہ طلب مسائل دوطرفہ بنیادوں پر حل ہوں۔ کشیدگی میں اضافہ کسی کے مفاد میں نہیں۔ دونوں ممالک کے وزرائے اعظم امن چاہتے ہیں، یقینی طور پر امریکہ بھی یہی چاہتا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان امن ہو۔اقوام متحدہ نے بھی وزیراعظم محمد نواز شریف اور بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے درمیان ملاقات کا خیر مقدم کرتے ہوئے اسے مثبت پیشرفت قرار دیا ہے۔ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون کے ترجمان سٹیفن دوجارک نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم دونوں ممالک کے درمیان مذاکرات پر بہت خوش ہیں۔ دونوں ممالک اور برصغیر کیdلئے پاکستان بھارت تعلقات میں پیشرفت انتہائی اہم اور مثبت پیشرفت ہے۔