0.3 فیصد ٹرانزکشن ٹیکس بھی مسترد، کئی تاجر تنظیمیں مکمل ختم کرانے پر متفق

11 جولائی 2015

لاہور (کامرس رپورٹر) حکومت کی جانب سے بینکوں سے لین دین پر عائد 0.6 فیصد ٹیکس کو کم کر کے 0.3 فیصد کئے جانے کے اعلان کو نامنظور کرنے والی تاجر تنظیموں نے اس ٹیکس کو مکمل طور پر ختم کرانے کے لیے حکومت پر دبا¶ جاری رکھنے کا فیصلہ کیا۔ اور اس ضمن میں مارکیٹوں میں رابطے شروع کر دیئے۔ قومی تاجر اتحاد کے صدر شیخ مشتاق، آل پاکستان انجمن تاجران کے جنرل سیکرٹری عبدالرزاق لاہور کے صدر مجاہد مقصود بٹ کے مطابق تمام مارکیٹوں کے تاجر اس ٹیکس کے خلاف ہیں اور انہوں نے عید کے بعد اس ٹیکس کو ختم کرانے کے لیے تاجر تنظیموں کے احتجاج میں بھرپور شمولیت کی یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے کہا کہ اگر عید تک حکومت نے بینکوں سے لین دین پر عاید 0.3 فیصد ٹیکس کو ختم نہ کیا تو اس کے خلاف اب ملک گیر شٹر ڈا¶ن کیا جائے گا۔ دریں اثناءصدر آل پاکستان انجمن تاجران محمد اشرف بھٹی سرپرست اعلیٰ آل پاکستان انجمن تاجران ظہیر اے بابر سیکرٹری جنرل حاجی طاہر نوید نے وزیر خزانہ سے مذاکرات کے بعد 0.6 بنک لین دین کو 0.3 فیصد کرنے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے مذاکرات کے دوران کھلے الفاظ میں کہہ دیا تھا کہ 0.6 فیصد ٹیکس کو موخر کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ آل پاکستان انجمن تاجران تاجر برادری کے ساتھ ہر سطح پر آواز اٹھائے گی۔