سانحہ صفورا کے مرکزی ملزموں طاہر منہاس سعد عزیز کو گواہوں نے شناخت کرلیا

11 جولائی 2015

کراچی (نیٹ نیوز) کراچی کے علاقے صفورا گوٹھ میں اسماعیلی برادری کی بس پر حملے کے 2 مرکزی ملزموں کو چشم دید گواہوں نے شناخت کر لیا۔ جوڈیشل میجسٹریٹ ملیر غلام مصطفیٰ ٹانوری کی عدالت میں ملزموں طاہر حسین عرف سائیں اور سعد عزیز کو غیر متعلقہ افراد کے ساتھ کھڑا کر دیا گیا، جہاں پانچ چشم دید گواہوں نے دونوں کی بطور ملزم شناخت کر لی۔ چشم دید گواہوں میں بس ڈرائیور اور تین خواتین بھی شامل تھیں جو اس واقعے میں زخمی ہوگئی تھیں۔ بی بی سی کے مطابق ابتدائی دنوں میں تعاون نہ ہونے کی وجہ سے پولیس کو تفتیش میں دشواری کا سامنا رہا، تاہم بعد میں تحفظ کی یقین دہانی کے بعد چشم دید گواہ شناخت کےلئے راضی ہو گئے۔ اس سے قبل طاہر حسین اور سعد عزیز کو پولیس کے سخت حفاظتی انتظامات میں عدالت میں لایا گیا۔ سعد عزیز کراچی اور طاہر منہاس کوٹڑی سے تعلق رکھتا ہے۔ محکمہ انسداد دہشت گردی نے طاہر منہاس کو حملے کا سرغنہ قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ وہ ’دولتِ اسلامیہ‘ سے متاثر ہے۔ واضح رہے کہ اسماعیلی برادری کی بس پر حملے کے نتیجے میں ڈرائیور سمیت 45 افراد ہلاک اور 8 زخمی ہوگئے تھے۔
سانحہ صفورا/ شناخت