سینٹ : اکثریت نہ ہونے سے حکومت کو بل منظور کرانے کیلئے اپوزیشن کی طرف دیکھنا پڑتا ہے

11 جولائی 2015

سینٹ کا 117واں سےشن 5روز جاری رہنے کے بعد جمعہ کو غےر معےنہ مدت کے لئے ملتوی ہو گےا۔ سینٹ مےں وفاقی حکومت اپنے زےر التوا4بل منظور کرانے مےں کامےاب ہو گئی اگر ےہ بل 15جولائی 2015ءسے قبل منظور نہ کراتی تو ےہ بل غےر موثر ہو جاتے۔سینٹ کے حالےہ انتخابات کے بعد اےوان کی ہےئت ترکےبی قدرے تبدےل تو ہو گئی ہے لےکن اےوان مےں اکثرےت نہ ہونے کی وجہ سے حکومت کو بل منظور کرانے کے لئے بار بار اپوزےشن کی طرف دےکھنا پڑتا ہے۔ راجہ ظفر الحق اپنے تعلقات کو بروئے کا رلا کر اپوزےشن کو رام کر لےتے ہےں لہٰذا بےشتر بل اتفاق رائے سے منظور کر ا لےتے ہےں۔ قائد حزب اختلاف چوہدری اعتزاز احسن اپوزےشن کا کھڑاک لگانے مےں مہارت رکھتے ہےں۔جب سے مےاں رضا ربانی سینٹ کے چےئرمےن منتخب ہوئے ہےں انہوں جہاں بہت سی چےزوں کو درست کر دےا ہے وہاں انہوں نے پارلےمنٹ کی بالا دستی کو تسلےم کرانے کے لئے احسن طرےقے سے ”کسٹوڈےن“ کا کردار ادا کررہے ہےں۔ وہ بھی کسی بھی معاملہ پر حکومت کا ساتھ دےتے ہےں اور نہ ہی اپوزےشن کی طرف داری کرتے ہےں آئےن و قانون کو پےش نظر رکھ کر ہاﺅس چلا رہے ہےں۔جمعہ کو سینٹ کا اجلاس سوا دو گھنٹے جاری رہا ےہ بات قابل ذکر ہے کہ انہوں نے ہر روز کا اجنڈا اسی روز نمٹانے کا مشکل کام شروع کےا جس کے لئے انہےں طوےل اجلاس منعقد کرنا پڑتے ہےں۔ چیئرمین سینٹ میاں رضا ربانی نے چین پاکستان اقتصادی راہداری مصوبے کی نگرانی کیلئے پارلیمانی کمیٹی کیلئے سات سینٹروں کے نام سپیکر قومی اسمبلی کو بھجوانے کی منظوری دیدی۔ قائد ایوان اور قائد حزب اختلاف کی مشاورت سے چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے کی نگرانی کیلئے بنائی جانے والی پارلیمانی کمیٹی کیلئے سات سینٹرزکے نام سپیکر قومی اسمبلی کو بھجوائیں گے۔ اےوان مےں مختلف کمےٹےوں کی رپورٹےں پےش کی گئےں۔ سینٹ کے اجلاس میں چیئرمین رضا ربانی نے وزیر دفاع خواجہ آصف کی عدم موجودگی پر شدید ناراضی کا اظہار کیا اور راجہ محمد ظفرالحق سے کہا کہ جائیں وزیر دفاع کو لیکر آئیں۔ وزیر مملکت شیخ آفتاب سے قدرے سخت الفاظ مےں گفتگو کی۔جمعہ کے روز سینٹ کے اجلاس میں سینیٹر سسی پلیجو کے توجہ دلاﺅ نوٹس جو کہ پاک بھارت سرحد پر فائرنگ کے واقعات بارے مےں تھا، کے دوران چیئرمین مےاں رضا ربانی نے کہا کہ وزیر دفاع خواجہ محمد آصف کہاں ہیں کون جواب دے گا۔اس موقع پر وزیر مملکت شیخ آفتاب نے مداخلت کرنے کی کوشش کی تو چیئرمین رضا ربانی نے انہیں بھی خاموش کرا دیا۔ سینٹ کے اجلاس میں چیئرمین مےاں رضا ربانی کی ہدایت پر قائد ایوان راجہ محمد ظفر الحق نے آزاد جموں وکشمیر کے سابق صدر و وزیراعظم سردار عبدالقیوم خان اور سابق وزیر خارجہ سعودی عرب سعود الفیصل کے انتقال پر دعائے مغفرت کرائی۔