رابطہ کمیٹی نے فاروق ستار کو کنو ینئر شپ سے ہٹا دیا: خالد مقبول منتخب، سازش بے نقاب، حقیقی ٹو کی بنیاد رکھ دی گئی ، سربراہ متحدہ؛ الیکشن کمشن نے خالد مقبول کے دستخط پر ٹکٹ جاری کرنے کا اختیار قبول کرلیا

11 فروری 2018 (21:24)

 رابطہ کمیٹی ایم کیو ایم پاکستان نے ڈاکٹر فاروق ستار کو مائنس کردیا۔ رابطہ کمیٹی نے ڈاکٹر فاروق ستار کو بطور کنونیئر فارغ کردیا اور ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی کو کنوینر منتخب کرلیا۔ کنور نوید جمیل نے رابطہ کمیٹی کے دیگر ارکان کیساتھ ملکر پریس کانفرنس میں فاروق ستار کو ہٹانے کا اعلان کیا۔ دوسری جانب فاروق ستار نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا میرے نادان ساتھیوں نے ثبوت دیا ہے مسئلہ ایک فرد کا نہیں، مسئلہ اختیارات کو اپنے قبضے میں کرنے کا ہے۔ ساتھیوں کی سازش بے نقاب ہوگئی، بلی تھیلے سے باہر آگئی۔ رابطہ کمیٹی نے حقیقی ٹو کی بنیاد رکھ دی ہے مزید برآں الیکشن کمشن نے متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے سربراہ فاروق ستار کی عدم موجودگی میں خالد مقبول صدیقی کے دستخط پر ٹکٹ ایوارڈ کرنے کا اعلان کردیا۔ فاروق ستار صورتحال دیکھ کر جھنجھلا گئے اور الیکشن کمیشن کے دفتر پہنچ گئے اور حکام سے بحث و مباحثہ کیا۔ صوبائی الیکشن کمشنریوسف خٹک نے خالد مقبول صدیقی کو پارٹی کی جانب سے ٹکٹ دینے کی منظوری دیدی۔ فاروق ستار نے کہا میری اجازت کے بغیرکیسے پارٹی ٹکٹ دیے جارہے ہیں،جس پر الیکشن کمشنر نے کہا کہ آپ کوسکروٹنی کے وقت پہنچنا چاہیے تھا، ہم کتنا انتظار کرتے؟ الیکشن کمشنر کے جواب پر فاروق ستار نے کہا میرا موقف بھی سنا جانا چاہیے تھا ، کاغذات نامزدگی کی منظوری پر مجھے تحفظات ہیں۔ صوبائی الیکشن کمشنر نے فاروق ستار سے کہا آپ بے شک عدالت سے رجوع کریں، ہمارا مسئلہ پارٹی ٹکٹ کا ہے ،آپ یہاں سے جائیں مجھے بہت کام ہے،ایم کیوایم کی لڑائی آپ جاکر اپنے دفاتر میں لڑیں۔ سٹاف رپورٹر کے مطابق ایم کیوایم پاکستان کی رابطہ کمیٹی نے کامران ٹیسوری کو سینٹ کا ٹکٹ جاری کردیا ہے۔ذرائع کے مطابق ایم کیوایم پاکستان کے ڈپٹی کنوینر خالد مقبول صدیقی کے دستخط کے بعد رابطہ کمیٹی نے کامران ٹیسوری کو سینیٹ کا ٹکٹ جاری کیا، ذرائع کے مطابق کامران ٹیسوری کو ٹکٹ دینے کا فیصلہ نامعلوم مقام پر ہونے والی رابطہ کمیٹی کی مشاورت میں کیا گیا۔کنور نوید جمیل نے کہا فاروق ستار پر بہت سے الزامات ہیں انہوں نے رابطہ کمیٹی کو علم میں لائے بغیر آئین میں تبدیلی کی۔ فاروق ستار نے رابطہ کمیٹی کے اعتماد کو ٹھیس پہنچائی۔ ایم کیو ایم کی الیکشن کمشن سے رجسٹریشن فاروق ستار کی غلطی سے منسوخ ہوئی تھی۔ فاروق ستار نے رابطہ کمیٹی کو بتائے بغیر ارکان کو چننے اور فارغ کرنے کے اختیارات اپنے ہاتھ میں لے لئے۔ یہ اختیار رابطہ کمیٹی کے پاس تھا۔ صورتحال حد سے گزر جائے تو ووٹرز کو اعتماد میں لینا پڑتا ہے۔ الیکشن سے پہلے تمام ارکان اسمبلی کو اپنے گوشوارے جمع کرانے ہوتے ہیں ایم کیو ایم کے کچھ ارکان کے گوشوارے آج تک جمع نہیں ہوسکے ۔ کے کے ایف فلاحی ادارہ ہے، فاروق ستار اس کے چیف ٹرسٹی ہیں، کے کے ایف تباہ ہوگئی رابطہ کمیٹی کہتی رہ گئی، کچھ نہ کیا یا، کامران ٹیسوری ان کے دوست ہیں فاروق ستار نے انہیں رابطہ کمیٹی میں شامل کرلیا۔ پوری رابطہ کمیٹی نے اعتراض کیا ، ٹکٹ دینے کا اختیار رابطہ کمیٹی کا تھا جس میں تبدیلی کی گئی۔ فاروق ستار نے دھوکے سے اپنے آپ کو سربراہ بنایا۔ رابطہ کمیٹی کے ارکان تقسیم سے بچنے کے لئے بار بار فاروق ستار کے پاس گئے۔ فاروق ستار نے کہا کامران ٹیسوری کو تسلیم نہ کیا تو میں نہیں رہوں گا، فاروق ستار کامران ٹیسوری کو سینیٹر بنوانا چاہتے تھے۔ انہیں بہت سمجھایا مگر وہ نہیں مانے، فاروق ستار کا اصرار تھا کامران ٹیسوری کو سینیٹر بنائیں، ہم سب فاروق ستار سے محبت کرتے تھے اور ہیں۔ نذیر حسین یونیورسٹی آج تباہ حالی کا شکار ہے سات ماہ سے ملازمین کو تنخواہ نہیں ملی۔ انہیں پورا کراچی سمجھاتا رہا لیکن فاروق بھائی سمجھنے کو تیار نہ ہوئے رابطہ کمیٹی نے 22 اگست کو طے کیا اب شخصیت نہیں تنظیم کو چلایا جائے گا۔ پی آئی بی میں ہمارے خلاف نعرے لگوائے گئے اور کارکن نہیں تھے ہمیں پتہ ہے بلوائے ہوئے لوگ تھے۔ فاروق ستار نے کہا مسئلہ سینٹ کی سیٹ کا نہیں آج مجھے نہیں ایم کیو ایم کے ایک وفادار کارکن کو نکالا گیا ہے۔ کسی سیٹ کا مسئلہ نہیں مسئلہ سیٹ کا اختیار دینے کا ہے۔میں پھر بھی نہیں کہوں گا ”مجھے کیوں نکالا“۔ میں نے غلطیاں کی تھیں تو سینٹ الیکشن کا انتظار کرنا چاہئے تھا۔ جنرل ورکرز کے اجلاس میں کارکنوں کی عدالت فیصلہ کرے گی۔ کارکنوں کے اجلاس میں کرارا جواب دیں گے، الیکشن کو غلط خط دیا یا، لاپتہ ساتھیوں اور شہیدوں کی قربانیوں سے انحراف کیا گیا۔ لاپتہ ساتھیوں کے خون کا سودا کیا گیا، سو سنار کی ایک لوہار کی ، چارج شیٹ کا کرارا جواب ابھی سن لیں، میرے ساتھ وہ سلوک کیا جو برادران یوسف نے کہا ہفتہ کو کہا گیا ہم میں سے کسی کو کنونیئر نہیں بننا۔آج کنونیئر کو ہی ہٹا دیا۔ برادران یوسف کا جو وہ سلوک تمہارے ساتھ ہوگا سازش کے تانے بانے بھی بُنے جارہے تھے، ثالثی کی بات بھی ہورہی تھی، آج کنونیئر کو فارغ کردیا کل مگر مچھ کے آنسو بہائے گئے، مسئلہ سینٹ ٹکٹ کا نہیں ایم کیو ایم پاکستان پر قبضہ کرنے کا ےہ۔ اب کنونیئر کی کرسی پر کوئی نہ کوئی تو بیٹھے گا۔
دیکھا جو تیر کھا کے کمین گاہ کی طرف
اپنے ہی دوستوں سے ملاقات ہوگئی
آئندہ بھی بلیاں تھیلے سے باہر آئیں گی۔ یہ ٹریلر ہے پوری فلم ابھی باقی ہے۔ فلم ایم سی گراﺅنڈ میں چلے گی ، فاروق ستار کراچی میں قبضوں اور کراچی کو بیچنے میں بھی سب سے بڑی رکاوٹ تھا۔ مرحلہ وار سازش تیار کی گئی ۔