صاف پانی کے ساتھ انصاف کی فراہمی بھی اتنی ہی ضروری ہے: رانا ثنااللہ

11 فروری 2018 (11:35)
صاف پانی کے ساتھ انصاف کی فراہمی بھی اتنی ہی ضروری ہے: رانا ثنااللہ

وزیرقانون پنجاب رانا ثنااللہ نے کہا ہے کہ کسی بھی معاشرے میں انصاف کی فراہمی کا ممکن بنانا سب سے ضروری ہے جس کے بعد صاف پانی کی فراہمی کا معاملہ آتا ہے۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری کے احاطے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا ثنااللہ نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ صاف پانی کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے. وزیر قانون پنجاب رانا ثنااللہ نے کہاہے کہ نیا وزیراعظم چیف جسٹس کے کہنے پر نہیں نوازشریف کے کہنے پر بنے گا تاہم چیف جسٹس نے جس خواہش کا اظہار کیا اللہ کرے وہ پوری ہو۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری صاف پانی ازخود نوٹس کی سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ نیا وزیراعظم چیف جسٹس کے کہنے پر نہیں نوازشریف کے کہنے پر بنے گا تاہم چیف جسٹس نے جس خواہش کا اظہار کیا اللہ کرے وہ پوری ہو جبکہ چیف جسٹس آف پاکستان نے پنجاب حکومت کی تعریف کی اور وزیراعلی پنجاب کی عدالت میں پیشی کو سراہا۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعلی عدالتوں کے بارے میں کوئی بیان بازی نہیں کر رہے، ہم اداروں کی عزت کرتے ہیں اور فیصلوں پر تنقید ہمارا حق ہے، پاکستان مسلم لیگ(ن)عدلیہ کے وقار پر یقین رکھتی ہے۔عدالت کی جانب سے جس کی نشاندہی ہوگی اس کے بعد ممکن بنائیں گے کہ خامیوں کو دور کیا جائے۔رانا ثنااللہ نے کہا کہ ایسے لوگ بھی ہیں جو اعلی عدالت کے ریمارکس کو اپنے گھٹیا سیاسی مقاصد کے لئے استعمال کرتے ہیں، کسی بھی پیشرفت میں ایسی بات نہیں ہونی چاہیے کہ مخالفین اسے پراپیگنڈے کے لئے استعمال کریں۔ خیال رہے کہ سپریم کورٹ نے صاف پانی کیس میں آج وزیراعلی پنجاب شہباز شریف کو طلب کر رکھا ہے۔ وزیراعلی کی پیشی سے قبل رانا ثنااللہ، بیگم ذکیہ شاہنواز، خواجہ احمدحسان چیف سیکریٹری پنجاب، آئی جی اور دیگر اعلی افسران سپریم کورٹ لاہور رجسٹری پہنچے۔