افغانستان سے بازیاب 17پاکستانیوں کو رشتے داروں کے حوالے کردیا گیا

11 فروری 2018

لنڈ ی کو تل (نا مہ نگار)افغانستان سے بازیاب ہونے والے 17 پاکستانیوں کو ان کے رشتے داروں کے حوالے کردیا گیا، متعدد جرگوں اور قبائلی عمائدین کی مداخلت پر ان کی بازیابی عمل میں آئی۔تفصیلات کیمطابق خیبرایجنسی میں حکام نے افغانستان کے صوبہ ننگرہار سے بازیاب کرائے گئے 17 پاکستانیوں کوان کے رشتے داروں کے حوالے کردیا۔ اس سلسلے میں ہفتہ کوایک پروقار تقریب منعقد کی گئی جس میں پولیٹیکل ایجنٹ خیبر ایجنسی ،اے پی اے لنڈیکوتل ،تحصیلدار لنڈیکوتل کے علاوہ سینیٹر ،سیاسی اور غیر سیاسی تنظیموں کے مشران نے شرکت کی،لنڈیکوتل بازار میں آتے ہی لوگوں نے انکو ہار پہنائے اور خوشی کا اظہار کیا بعد ازاں وہ اپنے گھروں کو روانہ ہوگئے جہاں پر رقت امیز مناظر دیکھنے کو ملے ہفتے کے دن لنڈ یکوتل میں جشن سا سما ں تھاان17 مغویوں میں پانچ افراد کا تعلق ایک ہی خاندان سے ہے، تمام افراد آپس میں رشتہ دار تھے،بازیاب ہونے والے ایک مغوی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے کئی بار موت کو اپنی آنکھوں سے دیکھا اور یہ سوچ رہے تھے کہ دوبارہ اپنے بچوں کے پاس زندہ نہیں جائیں گے جب ہم کو پتہ چلا کہ ہم رہا ہو رہے ہیں تو میں ہم سب نے شکرانے کے نوافل ادا کئے اور پاکستان آ کر اپنے ملک کی مٹی چھوم لی کہ ہمیں دوبارہ نئی زندگی ملی انہوں نے سیاسی اتحاد ،پی اے خیبر خالد محمود،سنیٹیر الحاج تاج محمداور میڈیا کابھی شکریہ ادا کیا۔جن کی دن رات کوششوں کی بدولت ان کی رہائی ممکن بنائی جا سکی۔ خیبر ایجنسی کے اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ نیاز محمد نے کے مطابق ان افراد کو تاوان کے لئے اغوا کیا گیا تھا لیکن یہ لوگ غریب خاندانوں سے تعلق رکھتے تھے اور متعدد جرگوں اور قبائلی عمائدین کی مداخلت پر ان کی بازیابی عمل میں آئی۔واضح رہے کہ نامعلوم مسلح افراد نے 5ماہ قبل ستمبر 2017ء میں ان 17 افراد کو خیبرایجنسی کے شہر لنڈی کوتل سے اغوا کرکے افغانستان کے صوبہ ننگرہار منتقل کردیا تھا۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...