بیجنگ 2018میں5جی نیٹ ورک کی رہنمائی شروع کردیگا

11 فروری 2018

بیجنگ(آئی این پی/شِنہوا) بیجنگ 2018میں اپنی عوامی آئی ٹی سروسز کو بہتر بنانے اور پانچ جی نیٹ ورکس کی پائلیٹنگ شروع کرنے کا ارادہ رکھتا ہے یہ بات اقتصادی وانفورمیشن ٹیکنالوجی کے بیجنگ میونسپل کمیشن نے بتائی ہے۔ کمیشن کو توقع ہے کہ 2020تک شہر کو چار جی نیٹ ورکس کی مکمل کوریج حاصل ہوجائے گی اور بیجنگ کے ذیلی انتظامی مرکز ،2019 بیجنگ ورلڈ ہار ٹیکلچرل ایکسپو،بیجنگ کے نئے ہوائی اڈے اور 2022سرمائی اولمپکس نے پانچ جی کی تجارتی آزمائش شروع کردی جائے گی۔چار جی ( چوتھی نسل)نیٹ ورکس جہاں ڈیٹا ٹرانسمیشن قریباًایک گیگا بائٹ فی سیکنڈ بڑھا دی ہے وہاں پانچ جی نیٹ ورکس کا مطلب اس میں دس گنا زیادہ اضافہ کرنا ہے۔ کمیشن کے ڈائریکٹر جان بوشو نے کہا کہ بیجنگ فنی طور پر پانچ جی کو آمائشی طور پر چلانے کے لیے تیار ہے۔یہ سروس قومی معیار قائم ہونے کے بعد دستیاب ہوجائے گی۔ چائنہ یونیکام نے بیجنگ ،تیان جن ، شنگھائی، شن جن ، ہانگ جو، نان جنگ اور شیان گان میں پانچ جی کو آزمائشی طورپر چلانے کی منظوری دینے کے لیے وزارت صنعت و انفورمیشن ٹیکنالوجی کو درخواست دی ہے۔ آئی ٹی ماہرین کو توقع ہے کہ 2019تک پانچ جی کے تجارتی استعمال کے لیے اہم رکاوٹیں دور کردی جائیںگی اور یہ کے نیا نیٹ ورک 2020تک ملک گیر طور پر دستیاب ہوگا۔