کیا امریکہ ہمیشہ افغانستان میں رہیگا، بتائے اسکا منصوبہ کیا ہے: بلاول

11 فروری 2018

واشنگٹن (این این آئی) بلاول بھٹو زرداری نے سوال کیا ہے کہ امریکہ ہمیں بتائے کہ اس کا کیا منصوبہ ٗ کیا سٹرٹیجی ہے؟ کیا امریکہ ہمیشہ افغانستان میں رہے گا؟واشنگٹن میں میڈیا سے بات چیت کے دوران بلاول بھٹو زرداری نے پاک ٗامریکہ تعلقات میں تناؤ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان پرامن ہوگا تو پاکستان پرامن ہوگا ٗاپنی کوتاہیوں کو چھپانے کے لیے الزام تراشی نہ کی جائے۔انہوں نے پاک امریکہ تعلقات میں بہتری کیلئے بیٹھ کر بات کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی اور انتہا پسندی عالمی مسئلہ ہے ٗہمیں مل کر انتہا پسندی اور دہشت گردی کو ختم کرنا ہوگا۔انہوںنے کہاکہ یہ ایک طویل مدتی جنگ ہے اور موجودہ صورتحال بہت خطرناک ہے۔بلاول بھٹو زر داری نے کہا کہ دہشت گردی اور انتہا پسندی کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے ٗ امریکہ کے اسکولوں میں بھی دہشت گردی کے واقعات ہوتے ہیں۔چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ چار سال سے پاکستان کا کوئی وزیر خارجہ نہیں تھاجس کی وجہ سے دنیا کے سامنے اپنا مؤقف موثر انداز میں پیش نہیں ہو سکا۔ سندھ حکومت نے اپنے وسائل سے انڈرپاس، سڑکیں بنائیں، وفاق بھی کراچی پر توجہ دے جبکہ مشرف دور میں کراچی کو خصوصی پیکج دیا جاتا تھا۔ آئندہ انتخابات پیپلزپارٹی تنہا لڑے گی، الیکشن کے بعد اتحاد کی بات ہو سکتی ہے تاہم کراچی میں تھوڑی بہتری آئی ہے، مزید بھی آجائیگی۔ بلاول بھٹو زرداری نے شہید ذوالفقار علی بھٹو کی جانب سے 10 فروری 1972 کو ملک میں پہلی بار اور تاریخی لیبر پالیسی کا اجرا کرنے کے پورے 46 سال بعد پیپلز لیبر پالیسی کا اعلان کرنے پر حکومت سندھ کو شاباش دی ہے۔ اپنے بیان میں پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ ان کی پارٹی نے ایک بار پھر ثابت کردیا کہ وہ ہی مزدوروں اور محنت کش طبقات کی نمائندہ جماعت ہے، اور پارٹی نے ہمیشہ محنت کش طبقات کے مفاد کو مقدم رکھا ہے۔