عمران کسی کے اشاروں پر سیاست کر رہے ہیں‘ نوازشریف کا کیا مقابلہ کرینگے: حفیظ الرحمن

11 فروری 2018

مدینہ منورہ (جاوید اقبال بٹ) وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے نوائے وقت کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا سی پیک منصوبہ گلگت بلتستان کیلئے گیم چینجر ہوگا۔ دوست نما ممالک بھی سی پیک کی مخالفت کر رہے ہیں جبکہ سی پیک پر قومی اتحاد ہے۔ ایک چائنیز کے ساتھ ایک سکیورٹی والا متعین ہے۔ گلگت بلتستان میںبھی سپیشل پولیس یونٹ کیلئے تین بلین روپے رکھے گئے ہیں۔ ایک سوال پر کہ سکیورٹی اداروں نے الرٹ جاری کیا ہے کہ گلگت بلتستان میں حملے متوقع ہیں۔ انہوں نے اس کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہم صرف اللہ سے ڈرتے ہیں جبکہ اللہ کے فضل سے مسلم لیگ (ن) کی حکومت کے بعد کوئی سنگل واقعہ بھی نہیں ہوا۔ انہوں نے کہا شاہرائوں کی تعمیر سے فاصلے کم‘ سفر محفوظ اور اس کی وجہ سے 2015ء سے بالترتیب 10‘ 15‘ 20 لاکھ سیاح گلگت سیروتفریح کیلئے آئے۔ انہوں نے کہا نوازشریف نے وزیراعظم کی حیثیت سے گلگت کی تعمیروترقی میں 70 سالہ ریکارڈ توڑ کام کروائے ہیں اور جو جاری بھی ہیں جن میں بلتستان یونیورسٹی‘ پہلا میڈیکل کالج‘ پہلا کالج‘ پہلا کینسر ہسپتال‘ پہلا کارڈیالوجی ہسپتال شامل ہیں جبکہ تعلیم کے شعبے میں پہلی جماعت سے دسویں تک کتب فری دی جاتی ہیں اور انشاء اللہ دیامر یونیورسٹی کیمپس کا افتتاح بھی اگلے مہینے ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا نوازشریف نے وزیراعظم کی حیثیت سے گلگت بلتستان کے طلباء جو ماسٹر اور ایم فل کر رہے ہیں‘ ان کی تعلیم کے اخراجات بھی ان کے والدین نہیں بلکہ وفاقی حکومت اٹھارہی ہے جس پر ابھی تک 44 کروڑ ارب لگا بھی چکے ہیں۔ اٹھارویں ترمیم کے تحت جو اختیارات باقی صوبوں کے پاس ہیں‘ وہ گلگت بلتستان کو بھی ایک ماہ میں ٹرانسفر ہو جائیں گے۔ پی پی کے 5 سالہ دور میں گلگت بلتستان میں 6 ماہ مسلسل کرفیو اور یونیورسٹی بند رہی۔ اب امن و امان کی سکیورٹی اداروں کے ساتھ مقامی لوگوں نے اپنے ہاتھ میں لے لی ہے۔ چائنیز کرنسی یووان کے استعمال اور لیز پر زمین کے مسئلے پر کہا اس میں شک نہیں تجارت کا توازن چین کے حق میں رہے گا۔ گوادر پورٹ سے براہ راست زمینی راستے سے سستی اشیاء کے ساتھ ہمیں ٹیکس کی مد میں بے پناہ رقم بھی ملے گی۔ عمران خان کے جلسہ چیلنج پر کہا عمران خان خود کسی کا مہرہ اور کسی کے اشاروں پر سیاست کر رہا ہے۔ سیاست پغمبرانہ پیشہ ہے جس میں خدمت طرۂ امتیاز ہوتا ہے جبکہ عمران خان نے گالی گلوچ‘ جھوٹ اور نفرت‘ تہمت کی سیاست کو پروان چڑھایا ہے۔ انہوں نے کہا عمران دن کی روشنی‘ 300 پیڈ خواتین اور ڈی جے سسٹم کے بغیر جلسہ بھی نہیں کر سکتا۔ نوازشریف کا کیا مقابلہ کرے گا۔ انہوں نے کہا 2015ء کے انتخاب کے موقع پر عمران خان نے گلگت بلتستان میں 20 جلسے اور 2 ہیلی کاپٹر استعمال کئے اور ایک سیٹ حاصل کی تھی جبکہ نوازشریف نے ایک جلسہ کیا اور 22 سیٹیں جیتی تھیں اور یہی حال پاکستان کے باقی شہروں میں ضمنی سیٹوں پر ہوا۔ اس موقع پر مسلم لیگی کارکن و عہدیداران اکرم اعوان‘ محمد عظیم اشرفی‘ ڈاکٹر حماد‘ فردوس جمال‘ ظفر اقبال طائف‘ نعیم اختر طائف‘ ڈاکٹر عارف خورشید طائف‘ غلام نبی مدنی‘ محمد نذیر بٹ اور دوسرے احباب بھی موجود تھے۔