شام نے اسرائیل کا ایف16 طیارہ مار گرایا‘ ترک ہیلی کاپٹر تباہ‘2 فوجی ہلاک

11 فروری 2018

تل ابیب‘ دمشق‘انقرہ (اے ایف پی)اسرائیلی آرمی نے کہا ہے کہ اْس نے شام میں ایران سے منسلک مختلف اہداف کو بڑے پیمانے پر نشانہ بنایا ہے۔اس سے قبل اسرائیلی فوج کے بیان میں کہا گیا کہ اسرائیلی فضائیہ کا ایک لڑاکا طیارہ اسرائیل کی ہی حدود میں گرا دیا گیا جو شام کی حدود میں اْس ہدف کو نشانہ بنا رہا تھا جہاں سے ایک ایرانی ڈرون نے پرواز کرتے ہوئے اسرائیلی حدود کی خلاف ورزی کی تھی۔اسرائیل کے مطابق ایف 16 طیارے کو شام کی سرزمین سے طیارہ گرانے والی توپوں سے نشانہ بنایا گیا۔دوسری جانب شام اور ایران نے مشترکہ بیان میں اسرائیلی الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایرانی ڈرون نے اسرائیلی حدود کی خلاف ورزی نہیں کی۔طیارے کے دونوں ہواباز طیارے سے نکلنے میں کامیاب ہو گئے اور اب ان کا ہسپتال میں علاج کیا جا رہا ہے۔اسرائیلی محکمہ دفاع کے ترجمان بریگیڈیئر جنرل رونن مینیلس نے کہا کہ یہ ڈورن اسرائیلی علاقے میں گرا اور وہ ’ہمارے قبضے میں ہے۔‘شمالی اسرائیل کے شہروں میں خطرے کے سائرن بجائے گئے ۔ سرحدی علاقے کے اسرائیلی شہریوں نے کئی دھماکوں کی آوازیں سننے کی اطلاعات دی ہیں۔اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 'ایک جنگی ہیلی کاپٹر نے ایک ایرانی ڈرون کو نشانہ بنایا جسے شام سے چھوڑا گیا تھا۔اس کے جواب میں اسرائیلی ڈیفنس فورسز نے شام میں ایرانی اہداف کو نشانہ بنایا۔شام کے سرکاری میڈیا نے کہا ہے کہ اس کے فضائی دفاع نے ہفتے کو شامی فوجی اڈے کے خلاف اسرائیل کی طرف سے ’جارحیت‘ کے بعد فائر کیے۔انقرہ سے اے ایف پی کے مطابق ترک وزیراعظم بینالی یلدرم نے کہا کہ اس کے 2 ہیلی کاپٹروں میں سے ایک گر کر تباہ ہوگیا جس سے 2افراد ہلاک ہوگئے۔ کردوں کے خلاف آپریشن 20جنوری کو شروع کیا گیا تھا۔ ہیلی کاپٹر عفرین کے علاقے میں گرایا گیا جس کے بعد ترک جنگی طیاروں نے کارروائی کرتے ہوئے کرد میلشیا کے 19اہداف کو نشانہ بنایا۔ طیب اردگان نے بھی ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنائے جانے کی تصدیق کی تھی جبکہ ترک حکام کا کہنا ہے کہ اس حوالے سے ایسے شواہد نہیں کہ یہ کارروائی کسی دوسرے ملک کی طرف سے کی گئی ہے۔