وزیر اعظم نیتن پاہو کرپشن تحقیقات میں تعاون نہیں کر رہے: اسرائیلی پولیس چیف کا الزام

11 فروری 2018

مقبوضہ بیت المقدس (اے این این) اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو اور انسپکٹر جنرل پولیس رونی الشیخ کے درمیان کرپشن الزامات کی وجہ سے ایک دوسرے پر کڑی تنقید کی گئی ہے۔ مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے انسپکٹر جنرل پولیس پر کڑی تنقید کی۔ دوسری جانب سے پولیس چیف رونی الشیخ نے وزیراعظم پر کرپشن کے الزامات عائد کئے ہیں اور کہا ہے کہ وزیراعظم بدعنوانی کی تحقیقات میں پولیس کے ساتھ تعاون نہیں کر رہے ہیں۔ نتین یاھو نے فیس بک پر پوسٹ ایک بیان میں کہا کہ انسپکٹر جنرل پولیس کی طرف سے کرپشن کے بار بار الزامات نا مناسب اور غیر حقیقی ہیں۔ ان کا کہناتھا کہ وہ بار بار پولیس کی تفتیش کا جواب دے چکے ہیں۔ہرشخص کو اپنے اوپر عائد کردہ الزمات کا خود جواب دینے کا حق ہونا چاہئے، میرے خلاف فرضی کہانیاں تیار کرکے کرپشن کے الزامات عائدکئے گئے ہیں۔ پولیس کی جانب سے مقدمہ چلانے کی سفارش پولیس کی جانب داری ظاہر کرتی ہے۔ میڈیا کے مطابق پولیس چیف نے ایک ٹی وی انٹرویو میں کہا کہ وزیراعظم سے منسوب کرپشن کے الزامات کی چھان بین ان کی ذمہ داری ہے مگر وزیراعظم کی طرف سے ان کے ساتھ تعاون نہیں کیا جا رہا ہے۔اسرائیلی ذارئع ابلاغ میں شائع ہونے والی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ پولیس نے مشیر قانون کو وزیراعظم کی کرپشن کے حوالے سے مزید شواہد پیش کیے ہیں اور ان سے کہا ہے کہ وہ آئندہ ہفتے وزیراعظم کے خلاف عدالتی کارروائی کے لیے تیاری کریں۔پولیس کا کہنا ہے کہ وہ جلد ہی شواہد اور ثبوتوں کی بنیاد پر نیتن یاھو کے خلاف عدالت میں مقدمہ چلانے کے بارے میں سفارش کرسکتی ہے۔

اسرائیلی پولیس چیف