سی پیک میں ہمارے صوبے کا حق تھالیکن طویل عدالتی جنگ کے بعد ملا ، اسد قیصر

11 فروری 2018

تورڈھیر،پشاور(اپنے نمائندوں سے) سپیکر خیبر پختونخوااسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ نوازشریف جب وزیراعظم تھاتو چین سے معاہدہ کرنے کیلئے صرف اپنے بھائی کو ساتھ لے کرگیااورسی پیک میں ہمارے صوبے کا حق کھاگیا، لیکن ہماری طویل عدالتی جنگ کے ذریعے صوبہ خیبر پختونخوا کو اس کا حق تحریری صورت میں ملا ،اس منصوبے میں شامل سرکل ریلوے جو چار سدہ ،مردان ،صوابی ،نوشہرہ کے درمیان ہیں ،کرنل شیرخان انٹرچینج اور رشکئی کے درمیان اکنامک زون سے معاشی انقلاب برپا ہوگا اور اس سے لاکھوں لوگوں کو روزگا رملے گا ۔ ہفتہ کے روز موضع تورڈھیر چھوٹا لاہور میں ایک بڑے شمولیتی اجتما ع سے خطاب کرتے ہوئے انہوںنے کہاکہ وہ وعدہ کرتے ہیں کہ اگلے دورحکومت میں ان کی جنگ روزگارکیلئے ہوگی اور یہ ان کا انتخابی منشور کا حصہ ہوگاکہ یہاں کے نوجوانوں کو روزگارکے مواقع مہیاکرسکیں ۔انہوںنے کہاکہ کاشتکاروں خاص کر تمباکوکے کاشتکاروں کے مسائل حل کرنے اور ان کو معاشی استحصال سے بچانے کیلئے وہ ہر حدتک جائیں گے جوعلاقے پانی سے محروم ہیں ۔ان کے لئے منصوبے لارہے ہیںجن میں اتلہ ،کنڈل ،بادہ ڈیم اور پیہورکنال ایکسٹینشن جیسے منصوبے شامل ہیں زرعی آلات بیج ،کھاد سبسڈی دیں گے ۔تورڈھیر بائی پاس پر جلد کام شروع ہوجائے گا اسکے علاوہ سوئی گیس حکام سے چھوٹالاہور میں گیس کا دفتر کھلوانے بات چل رہی ہے اوراب یہاں کے لوگوںکو صوابی سے جانے کی ضرورت نہیں ہوگی ۔ انہوںنے عوامی نیشنل پارٹی کی سیاست پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ باچاخان کی روح اپنے اولاد کے کالے کر توتوں اورلوٹ مارپر تڑپ رہی ہوگی ۔افسوس اس بات کا ہے کہ باچا خان جیسے عظیم لیڈر کے جانشین نالائق اور نااہل لوگ ہیں ۔جن کاکام اپنے دورحکومت میں صرف لوٹ مار اور ایذی لوڈ تھا ۔

اسد قیصر