بلین ٹری سونامی منفرد منصوبہ‘ بے ضابطگیوں کا پراپیگنڈا غلط ہے: عمران

11 فروری 2018

سیالکوٹ‘اسلام آباد (نامہ نگار‘نوائے وقت رپورٹ) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے موجودہ حکومت کے نیب میں کیسز کے حوالے سے کہا کہ موجودہ حکومت کرپٹ افراد‘ اقامہ ہولڈرز اور ٹھگوں پر مشتمل ہے۔ انہوں نے وزیرخارجہ خواجہ آصف کو سکیورٹی رسک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ انکے خلاف کرپشن کے واضح ثبوت موجود ہیں۔ وہ منی لانڈرنگ اور مالی جرائم میں ملوث ہیں جس کے ناقابل تردید شواہد ہیں۔ خواجہ آصف کے فارن اکاﺅنٹس میں کروڑوں روپے منتقل ہوئے۔ منی لانڈرنگ کیلئے اہلیہ کے فارن اکاﺅنٹ بھی استعمال کئے گئے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے لودھراں میں تحریک انصاف کے رہنما عمر ڈار کی قیادت میں سابق ایم پی ایز چودھری اخلاق‘ چودھری طاہر محمود ہندلی سابق وفاقی وزیر وزیر علی اسجد ملہی‘ میاں عابد جاوید‘ باﺅ طارق‘ سابق وزیر آزاد کشمیر صاحبزادہ حامد رضا اور دیگر کے ہمراہ ملاقات کے دوران کیا۔ خواجہ آصف غیرملکی کمپنی میں ملازمت اور اقامہ تسلیم کر چکے۔ نیب منی لانڈنگ کی تحقیقات کا آغاز کرے۔ انہوں نے کہا کہ شیر کا شکار ہو چکا‘ اب گیدڑوں کی طرح ہمارے رہنماﺅں اور کارکنوں پر کبھی سائبر کرائم تو کبھی اغوا برائے تاوان جیسے مقدمات کرکے حملے کئے جا رہے ہیں۔ مدمقابل ٹیم کے بیشتر کھلاڑی میدان میں آنے سے پہلے ہی توہین عدالت پر آﺅٹ ہو چکے ہیں۔ اب اقامہ ہولڈرز بھی کلین بولڈ ہونے جا رہے ہیں۔ علاوہ ازیں عمران خان نے کہا ہے کہ بلین ٹری سونامی اپنی نوعیت کا منفرد منصوبہ ہے جس کے تحت ایک ارب 16 کروڑ درخت لگائے گئے۔ خیبر پی کے میں 5 لاکھ لوگوں کو روزگار ملا۔ ماحولیاتی تبدیلی سے متاثرہ ممالک میں پاکستان کا ساتواں نمبر ہے۔ راجن پور‘ چیچہ وطنی اور چھانگا مانگا کے جنگلات ختم ہو چکے، پنجاب حکومت اس اہم مسئلے پر توجہ نہیں دے رہی۔ انہوں نے بلین ٹری سونامی منصوبے میں بے ضابطگیاں پراپیگنڈا قرار دیتے کہا کہ تین سال میں ایک ارب 12 کروڑ درخت لگائے۔
عمران خان